جرائم و حادثات

نظام آباد ضلع میں چیک باؤنس کیس میں ایک شخص کو جیل _ دھوکہ باز شخص نے ہاسپٹل کے قیام کیلئے 30لاکھ روپئے حاصل کئے تھے

نظام آباد:24/ جون (اُردو لیکس)تجارت کیلئے بعض دھوکہ دہی کرنے والے افراد قانون کی نظر سے محفوظ نہیں رہے سکتے۔ ایسے ہی ایک واقعہ میں ہاسپٹل کے کاروبار میں 30لاکھ روپئے مبینہ طور پر دھوکہ دہی کے الزام میں ایک شخص کو 12 ویں میٹرول پولٹین مجسٹریٹ کورٹ نامپلی نے اسے جیل بھیج دیا۔

تفصیلات کے بموجب تلنگانہ کے نظام آباد ضلع کے بودھن منڈل پنٹا کالونی سے تعلق رکھنے والے جی سائیلو جو بحیثیت آر ایم پی ڈاکٹر کی خدمات انجام دے رہا تھا اس نے سنگاریڈی سے تعلق رکھنے والے سری کانت ریڈی سے 6 سال قبل دوستی ہوئی تھی۔ اس نے سری کانت کو بتایا کہ وہ ایک ہاسپٹل قائم کررہا ہے اگر اس میں سرمایہ کاری کئے جانے پر وہ اس کو اس ہاسپٹل میں شراکت دار بنائے گا۔ اس وقت سری کانت نے سائیلو کو چار سال قبل 30 لاکھ روپئے دئیے تھے اور اس تعلق سے ایک سادہ تحریر نامہ لکھ کر دیا تھا۔ سری کانت رقم طلب کرنے پر سائیلو کو بینک چیک فراہم کئے تھے۔ سری کانت نے چیک کو جب بینک میں جمع کیا تو وہ باؤنس ہوگئے جس پر اس نے سری کانت سے اس سلسلہ میں جواز طلب کیا۔ سائیلو نے اس کی رقم واپس کرنے سے انکار کردیا اور اسے دھمکی دی۔ جس پر سری کانت کو اس بات کا احساس ہو اکہ وہ دھوکہ دہی کا شکار ہوگیا۔

سری کانت نے اس کے پاس دستیاب تمام ثبوت کے ساتھ عدالت کا سہارا لیا۔ عدالت نے چیک باؤنس کیس میں سائیلو کو چار سمن جاری کئے لیکن سائیلو نے ان سمنس کو حاصل نہیں کیا جس پر معزز عدالت نے سائیلو کیخلاف ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کیا۔ جس پر پولیس نے سائیلو کو چہارشنبہ کی شب گرفتار کیا اور بارویں میٹرول پولٹین مجسٹریٹ کورٹ نامپلی میں پیش کیا جہاں پر معزز جج نے سائیلو کو ریمانڈ پر بھیج دینے کے احکامات جاری کئے۔ سائیلو نے اس سے قبل بانسواڑہ میں سری سوما نویتا ہاسپٹل قائم کیا تھا اور ایم بی بی ایس فزیشن کے نام سے شہرت حاصل کی تھی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button