نظام آباد پولیس نے تین دن قبل اغوا ہونے والی معصوم اذکیہ ہانی کو ماں کے حوالے کردیا

نظام آباد _ نظام آباد شہر کے ایک شاپنگ مال سے جمعہ دوپہر اغوا ہونے والی معصوم اذکیہ ہانی کو پولیس نے مہاراشٹر کے نرسی علاقے سے برآمد کرلیا اور آج سہ پہر نظام آباد پولیس کمشنر نے لڑکی کو اس کی ماں کے حوالے کردیا ۔تفصیلات کے مطابق جگتیال ضلع کے میٹ پلی ٹاون کی رہنے والی نورین سلطانہ نامی خاتون نے جمعہ کے روز نظام آباد میں ایک شاپنگ کے لئے اپنی تین سالہ اذکیہ ہانی کے ساتھ گئی تھی شاپنگ مال سے لڑکی اچانک لاپتہ ہوگئی۔نورین سلطانہ نے شاپنگ مال کے انتظامیہ کو اس کی اطلاع دی۔جس پر پولیس میں شکایت درج کروائی گئی۔پولیس شاپنگ مال کے سی سی کیمروں کی جانچ کی جس میں دو برقعہ پوش خاتون لڑکی کو ساتھ لے کر جاتے ہوئے دیکھا گیا۔جس پر پولیس نے شاپنگ مال کے باہر کے کیمروں اور شہر کے مختلف علاقوں کے کیمروں کی جانچ کی۔دو دن تک لڑکی کا کوئی پتہ نہیں چلا۔جس پر پولیس نے لڑکی کا پتہ بتانے والوں کو 50 ہزار روپے انعام کا بھی اعلان کیا تھا

بالآخر نظام آباد پولیس نے آج تیسرے دن مہاراشٹر کے نرسی سے لڑکی کو برآمد کرلیا۔پولیس کمشنر نے پریس کانفرنس میں تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ نانڈیر ضلع کے نرسی علاقے میں اغوا کاروں نے لڑکی کو چھوڑ کر فرار ہوگئے تھے دانش قریشی نامی شخص نے لڑکی کو دیکھ کر مقامی پولیس کے حوالے کیا اور مہاراشٹر پولیس نے نظام آباد پولیس کو اس کی اطلاع دی اور لڑکی کو وہاں سے لایا گیا۔