دہلی کے قریب سنگھو بارڈر پر نامعلوم شخص کی نعش بکرے کی طرح لٹکی ہوئی پائی گئی

نئی دہلی _ قومی دارالحکومت دہلی کے قریب سنگھو  بارڈر پر ایک شخص کا انتہائی بے دردی سے قتل کردیا گیا  جہاں کسان زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ کسانوں کے احتجاجی مقام کے قریب ایک شخص (35) کو بے دردی سے قتل کر دیا گیا۔ جمعہ کی صبح اس شخص کی نعش ایک اسٹائنڈ پر  بکرے کی طرح   لٹکی ہوئی ملی جس کا ایک ہاتھ جسم سے علیحدہ کر دیا گیا ۔ تاہم مرنے والے کی شناخت ابھی تک معلوم نہیں ہوسکی ہے۔ کنڈلی پولیس نے بتایا کہ ابتدائی معلومات کے مطابق قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے اور تحقیقات جاری ہے۔

یہ واقعہ  سے کسانوں میں شدید بے چینی پھیل گئی۔ کسانوں کی تنظیم  (SKM) نے حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ پنجاب اور ہریانہ میں گھومنے والے بدمعاشوں سازش  ہے۔ ایس کے ایم نے کہا کہ وہ افسوسناک واقعہ کی تحقیقات میں پولیس کے ساتھ تعاون کرے گی۔

دریں اثنا ، زرعی   قوانین کے خلاف کسانوں کا احتجاج 11 ماہ میں داخل ہوگیا ہے۔ خاص طور پر پنجاب اور ہریانہ کے کسان دہلی کی سرحد پر احتجاج کررہے ہیں۔