جرائم و حادثات

حیدرآباد میں کروڑوں کی جائیداد کے لئے دو معمر بہنوں کا اغوا

حیدرآباد _ حیدرآباد میں دو معمر خواتین کو نامعلوم افراد نے جائیداد کے لیے اغوا کیا۔ خواتین کو امین پور کے ایک کمرے میں بند کردیا گیا تاہم یہ دونوں مقامی لوگوں کی مدد سے باہر نکلنے میں کامیاب ہوگئے ۔ اس واقعہ پر ایس آر  نگر پولیس نے ماسٹر مائنڈ اور چار دیگر کے خلاف اغوا کا مقدمہ درج کیا ہے۔ ایس آر  نگر سی آئی کے مطابق ، چار نامعلوم افراد نے جمعرات کی صبح امبرپیٹ لیلانگر میں واقع ان کے گھر سے دو  بہنوں عصمت النساء بیگم (73) اور محمدی النساء بیگم (70) کو اغوا کرلیا۔ وہ ایک کار میں آئے اور ان پر حملہ کیا اور انہیں اپنی تحویل میں لے لیا۔ انہوں نے امین پور کے ایک کمرے میں ہاتھ پیر باندھ دیااور ، منہ پر پلاسٹر لگایا ، کمرے کو قفل لگا کر وہاں سے چلے گئے۔ عصمت النساء بیگم نے ہاتھ کو باندھی گئی رسی نکال کر کھڑکی کے پاس آکر مدد کے لیے چیخا۔ چوکیدار مقامی لوگ وہاں پہنچے اور دروازے توڑ کر ان دونوں کو رہا کرایا۔ اس کے بعد انہوں نے مقامی پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی۔ امین پور پولیس نے ایک زیرو ایف آئی آر درج کی اور متاثرین کو شام میں ایس آر  نگر پولیس کے حوالے کیا۔ بیگم پیٹ کے سلیم خان اور دیگر نے پولیس پر زور دیا کہ وہ خواتین کو انصاف دلائے۔

بتایا جاتا ہے کہ میر یوسف علی خان کو  امیرپیٹ لیلانگر میں تقریبا  2600 گز زمین تھی۔ ان کی تین بیٹیاں اور دو بیٹے ہیں۔ ان تمام کا انتقال ہوگیا ۔ عصمت االنسا بیگم اور محمدی النساء بیگم زندہ ہیں دونوں ایک کمرے میں  رہ رہے تھے  معلوم ہوا ہے کہ انہیں کروڑوں روپے مالیت کی جائیداد پر قبضہ کرنے کے لیے اغوا کیا گیا تھا۔ پولیس نے معراج احمد قریشی اور چار دیگر کے خلاف اغوا اور حملہ کے مقدمات درج کر لیے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button