جرائم و حادثات

حیدرآباد کے گاندھی ہاسپٹل میں دل دہلانے والا واقعہ _ مریض کے ساتھ آنے والے دو بہنوں کے ساتھ ہاسپٹل کے عملے نے کی یہ حرکت

حیدرآباد _ حیدرآباد کے گاندھی ہاسپٹل میں مریض کے ساتھ آنے والے دو بہنوں کو یرغمال بناکر چار دنوں تک اجتماعی عصمت ریزی کرنے کا دل دہلانے والا واقعہ سامنے آیا ہے اس گھناونے واقعہ میں گاندھی ہاسپٹل کے آوٹ پیشنٹ کا کمپیوٹر آپریٹر اوما مہیشور اور سیکورٹی کے تین ملازمین کے ملوث ہونے کی اطلاع ہے۔بتایا جاتا ہے کہ محبوب نگر سے تعلق رکھنے والا شخص جو گردہ کے مرض میں مبتلا ہے دو ہفتے قبل گاندھی ہاسپٹل میں شریک ہوا تھا اس کی بیوی تروپتماں کے ساتھ اس کی بہن سوارنا بھی ہاسپٹل آئی تھی علاج کے دوران مریض کو دوسرے وارڈ میں منتقل کیا گیا۔ان دو بہنوں کو نئے  وارڈ کا علم نہیں تھا اور انہوں نے کمپیوٹر آپریٹر اومامہیشور سے وارڈ کے بارے میں معلومات حاصل کیں۔متاثرہ خاتون نے بتایا کہ اومامہیشور نے انھیں وارڈ میں لے جانے کا وعدہ کرتے ہوئے اسٹور روم میں یرغمال بنا لیا اور چار دنوں تک عصمت ریزی کی۔اومامہیشور کے ساتھ تین سیکیورٹی گارڈ بھی تھے

دو متاثرہ خواتین میں ایک لاپتہ ہے متاثرہ خاتون نے محبوب نگر پولیس اسٹیشن میں اس واقعہ کی شکایت کی۔تاہم محبوب نگر پولیس نے حیدرآباد کے چلکل گوڑہ پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروانے کا مشورہ دیا۔اطلاعات کے مطابق چلکل گوڑہ پولیس نے اومامہیشور کو گرفتار کرلیا اور تحقیقات شروع کردی ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button