تلنگانہ انٹرمیڈیٹ میں ناکام طلباء کوکامیاب قراردینے کا مطالبہ۔ کانگریس لیڈرکی بھوک ہڑتال

حیدرآباد: تلنگانہ انٹرمیڈیٹ کے امتحانی نتائج میں ناکام کئی طلبہ کی حمایت میں تلنگانہ کانگریس کے سینئر لیڈرو رکن اسمبلی جگاریڈی نے بھوک ہڑتال کی۔اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تلنگانہ میں تعلیمی نظام پر حکومت نیند میں ہے۔ گزشتہ دو سال سے طلباء کو بورڈ کے موقف کی وجہ سے مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 4.50 لاکھ طلبہ نے امتحان تحریرکیا تاہم 2.35 لاکھ طلبہ ناکام قراردیئے گئے۔انہوں نے مزید سوال کرتے ہوئے کہا کہ جب بیشتر ریاستوں میں کووڈ کی وجہ سے طلبہ کو کامیاب قراردیاگیا توپھرتلنگانہ میں طلبہ کو کیوں کامیاب قرارنہیں دیاگیا۔ انہوں نے دعوی کیاکہ تمام ناکام طلبہ کا تعلق سرکاری کالجس سے ہے۔انہوں نے کہا کہ کوویڈ کی وجہ سے کوئی آن لائن کلاسس نہیں ہوئی ہیں۔حکومت کالج کے طلبہ کو انٹرنیٹ کی سہولت فراہم نہیں کررہی ہے۔پرائیویٹ کالجس میں آن لائن کلاسس کا آغاز ہو گیا ہے۔ان کالجس کے طلبہ کو کامیاب کیاگیا۔انہوں نے بغیر کسی سہولت کے ناکام طلبہ کو نظرانداز کرنے پر سوال اٹھائے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ حکومت طلباء کے معاملے میں تاخیر کیوں کر رہی ہے جس کی وجہ سے آئے دن کامیاب طلبہ کی موت ہورہی ہے۔ حکومت جلد فیصلہ کرے تو ان کے لیے بہتر ہو گا۔