نیشنل

مسلمانوں کے خلاف نفرت انگیز تقاریر۔ سپریم کورٹ کی اترکھنڈ حکومت کو نوٹس

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے ہریدوارمیں منعقدہ دھرم سنسد میں مسلمانوں کی نسل کشی کی دھمکیاں دیتے ہوئے کی گئیں قابل اعتراض اور انتہائی اشتعال انگیز تقاریرسے متعلق داخل کی گئی درخواستوں پرسماعت کرتے ہوئے اترکھنڈ حکومت کو نوٹس جاری کی ہے۔ یہ درخواستیں مفاد عامہ کےتحت داخل کی گئی جس پرچیف جسٹس این وی رمن،جسٹس سوریہ کانت اور ہیما کوہلی کی بنچ اس کی سماعت کرے گی۔

واضح رہے کہ گزشتہ سال دہلی اور ہری دوار میں 17 اور 19 دسمبر کو ہندو یوا واہنی کی طرف سے منعقدہ دو مختلف پروگراموں میں ’دھرم سنسد‘کے دوران کچھ سرکردہ مقررین کی طرف سے مسلم کمیونٹی کے خلاف مبینہ طور پر قابل اعتراض اشتعال انگیز تقریریں کرنے کے الزامات ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button