حیدرآباد سے ایک اور کورونا ویکسین تیار _ 30 کروڑ ویکسین خریدنے حکومت نے کمپنی سے کیا معاہدہ

حیدرآباد _ حیدرآباد سے ایک اور کورونا  ویکسین تیار ہورہا ہے جو آئندہ ماہ مارکیٹ میں متعارف ہوجائے گا۔بیائیولوجیکل ای ( بی ای) نامی اس فارما کمپنی کے ساتھ مرکزی حکومت نے 30 کروڑ ویکسین خریدنے کا معاہدہ کیا

مرکرزی حکومت آنے والے مہینوں میں پورے ملک میں کورونا ویکسین کو وسیع پیمانے پر دستیاب کرنے کی کوششیں تیز کر رہی ہے۔ اسی کے ایک حصے کے طور پر ، مرکزی وزارت صحت نے جمعرات کو حیدرآباد میں قائم دوا ساز کمپنی بائیولوجیکل ای لمیٹڈ (بی ای) سے 30 کروڑ ویکسین خوراک کے پیشگی انتظامات کو حتمی شکل دے دی ہے ۔ مرکزی حکومت اس کے لئے 1500 کروڑ روپے کی ایڈوانس فراہم کرے گی۔ وزارت صحت نے ایک بیان میں کہا ، دواساز کمپنی رواں سال اگست اور دسمبر کے درمیان ویکسین کی خوراک تیار اور محفوظ کرے گی۔ یہ ایک اور دیسی ساختہ ویکسین ہے جو کوواگین کے بعد دستیاب ہوگی۔

بائیولوجیکل ای کی تیار کردہ کورونا ویکسین پہلے دو مراحل میں بہتر نتائج دکھائی ہے ۔تیسرا مرحلہ اس وقت کلینیکل ٹرائلز سے گزر رہا ہے۔ کمپنی نے امریکہ میں بییلر کالج آف میڈیسن کے اشتراک سے کوڈ ویکسین تیار کی۔ اور، سنٹرل ڈرگس اینڈ اسٹینڈرز کنٹرول آرگنائزیشن (سی ڈی ایس ای او) نے ایک ماہ قبل ٹرائلز کے تیسرے مرحلے کے لئے اس کی منظوری دی تھی۔محکمہ بائیوٹیکنالوجی نے دوا ساز کمپنی کو مالی اعانت کے لئے 100 کروڑ روپئے کی فراہمی بھی کی۔ دونوں کے مابین متعدد مطالعات کی خاطر معاہدہ ہوا ہے۔

دوسری طرف ، جانسن اور جانسن نے بائیولوجیکل ای کے ساتھ ہمارے ملک میں ویکسین تیار کرنے کے لئے ایک معاہدہ کیا ہے۔ کینیڈا کی ایک کمپنی پروویڈنس تھراپیٹک سے ایم آر این اے ویکسین درآمد کرنے اور یہاں یہ ویکسین تیار کرنے کا معاہدہ طے پایا ہے۔ کمپنی فی الحال پیداواری منصوبوں کے مطابق ضروری فنڈ اکٹھا کرنے کے عمل میں ہے۔