انٹر نیشنل

عراق : احتجاجی پارلیمنٹ میں گھس گئے

نئی دہلی: عراق میں سیاسی بحران سنگین رخ اختیارکرگیا ہے احتجاجی عراقی پارلیمنٹ میں داخل ہوگئے۔ انتخابات کے 290 دن بعد بھی تشکیل حکومت نہ ہونے پرعوام احتجاج کرتے ہوئے سڑکوں پرنکل آئے۔ احتجاجیوں نے عراقی پارلیمنٹ میں گھس کر اسپیکر کا ڈائس سنبھال لیا اور عمارت میں دندناتے ہوئے گشت کررہے تھے اس پارلیمنٹ میں کوئی بھی قانون ساز موجود نہیں تھا۔

چہارشنبہ کے دن احتجاجی دارالحکومت کے ہائی سکیورٹی والے گرین زون میں داخل ہوگئے جس میں سرکاری عمارتیں اور سفارتی دفاترقائم ہیں۔ پولیس نے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کے لیے طاقت کا استعمال کیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق عراق میں امریکی مداخلت کی مخالفت کرنے والے شیعہ عالم الصدر نے اکتوبر کے انتخابات کے بعد اپنی فتح کا دعویٰ کیا تھا تاہم اس کے بعد سے نیا حکومتی اتحاد بنانا ناممکن ثابت ہوا۔

گزشتہ سال اکتوبر میں ہوئے انتخابات میں الصدر کے سیاسی اتحاد نے سب سے زیادہ نشستیں حاصل کی تھیں لیکن سیاسی تعطل کی وجہ سے وہ اقتدار تک نہیں پہنچ پائے ہیں۔ ایران نواز جماعتوں نے محمد شاع السودانی کو وزیراعظم نامزد کیا ہے مگر دوسری جماعتوں کے حامیوں نے انھیں مسترد کر دیا اور ان کے خلاف احتجاجی ریلیاں نکالی جا رہی ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button