بنگلہ دیش کے فرقہ وارانہ تشدد میں ایک بھی مندر توڑی نہیں گئی _ وزیر خارجہ بنگلہ دیش

حیدرآباد _ بنگلہ دیش نے  ملک میں فرقہ وارانہ تشدد کے حالیہ واقعات کی صورتحال پر ایک بیان جاری کیا ہے جس میں کہا گیا کہ ملک میں پیش آئے فرقہ وارانہ تشدد کے دوران ایک بھی مندر کو نہیں توڑا گیا ۔ بنگلہ دیش کی وزارت خارجہ نے  کہا کہ فرقہ وارانہ تشدد سے متعلق تمام  جاری پروپیگنڈے” کے برعکس حالیہ تشدد کے دوران صرف 6  افراد ہلاک ہوئے ہیں

جن میں سے 4 مسلمان  اور صرف دو ہندو تھے ، جو پولیس کے ساتھ مقابلے کے دوران مارے گئے، ، جن میں سے ایک کی موت معمول کے مطابق ہوئی تھی اور دوسرے نے تالاب میں چھلانگ لگا دی تھی۔ بنگلہ دیش کے وزیر خارجہ اے کے عبدالمومن کی جانب سے جاری  بیان میں کہا کہ کسی کی عصمت ریزی نہیں ہوئی اور ایک بھی مندر توڑی نہیں گئی ۔

البتہ دیوی دیوتاؤں کی توڑ پھوڑ کی گئی۔ انھوں نے تشدد کو بدبختانہ واقعہ قرار دیا اور کہا کہ ایسا نہیں ہونا چاہیے تھا، حکومت نے فوری ایکشن لیا۔ مجرموں کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور اب وہ پولیس کی تحویل میں ہیں،

وزیر خارجہ نے  کہا کہ حکومت کو بدنام چند میڈیا گھرانوں نے من گھڑت کہانیاں پیش کی ہیں