نارائن پیٹ میں محمد یوسف میموریل اینڈ ایجوکیشنل سوسائٹی کی جانب سے 500 غریب اور یتیم طلبہ میں ایجوکیشن کٹس کی تقسیم

نارائن پیٹ: نارائن پیٹ ٹاؤن کے ماڈرن ہائی اسکول میں محمد یوسف میموریل اینڈ ایجوکیشنل سوسائٹی کے زیراہتمام نارائن پیٹ ٹاؤن کے سرکاری و خانگی اسکول’ مدرسہ کے تقریبا 500 غریب و یتیم طلباء و طالبات میں نرسری جماعت تا انٹر میڈیٹ کے طلباء میں فری ایجوکیشن کٹ کی تقسیم عمل میں لائی گئی۔ اس موقع پر منعقدہ تقریب کی صدارت حاجی محمد شرف الدین سنڈکے صدر سوسائٹی نے کی۔

جبکہ مہمان خصوصی کی حیثیت سے نارائن پیٹ ضلع آر ٹی او آفیسر ویرا سوامی’ ضلع میناریٹی ویلفیر آفیسر گویندا راجن’ محمد غوث سنڈکے انجنیئر’ ڈاکٹر مدھوسدھن ریڈی کیڈس ہاسپٹل’ جگدیش ریڈی ٹمریز کالج پرنسپل’ خلیل احمد تاج صدر المکہ ایجوکیشن سوسائٹی’ ہدایت اللہ’ محمد حسین سنڈکے’ ریاض الدین رنگریز’ محمد مظہر یوسف حیدر آباد’ مولانا فاروق بن مخاشن کے علاوہ دیگر نے شرکت کی۔ اس موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ تعلیم ایک ایسی طاقت ہے، جس سے ہر کسی کی قسمت بدل سکتی ہے، تعلیم کے بغیر دنیا میں انسان کی کوئی اہمیت نہیں ہے، آج کے اس جدید ٹکنالوجی والے دور میں تعلیم سب کے لئے ضروری ہے، خاص کر مسلمانوں کو چاہئے کہ تعلیم پر خصوصی توجہ دیں۔آج تعلیم حاصل کرنے کیلئے حکومت کی طرف سے بہت ساری سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں،

ایک زمانہ ایسا تھا کہ تعلیم حاصل کرنا بڑی بات تھی، مگر آج حق تعلیم ایکٹ کے تحت6 سے14 سال تک کی عمر تک بچوں کو مفت تعلیم دی جارہی ہے، اور بہت ساری سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں، والدین کو چاہئے کہ اپنے بچوں کو اسکول بھیج کر اعلیٰ تعلیم دلائیں، کیونکہ ہر بچے میں کوئی نہ کوئی صلاحیت پوشیدہ ہوتی ہے، اس کو نکھارنے کی ذمہ داری والدین اور اساتذہ کی ہوتی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ مسلمانوں کا ماضی نہایت روشن وتابناک رہا ہے، مگر حال نہایت تنگ دامانی سے لبریز ہے، ماضی کی طرح مستقل کو بھی روشن بنانے کے لئے ضروری ہے کہ ہم ابھی سے منصوبہ تیار کریں اور اس پر عمل کرنے کی بھرپور کوشش کریں،

 

یہ کام کسی ایک شخص یا ادارے سے ممکن نہیں ہے، بلکہ قوم کے ہر فرد اور ہر ادارے کو چاہئے کہ اس خصوص میں کام کرے اور قوم کے نونہالوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے میں اہم کردار ادا کرے۔ انہوں نے طلبہ کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کہا کہ آج جتنی بھی ترقی ہورہی ہے، سب کچھ تعلیم کی بنیاد پر ہی ہورہی ہے، یہ تعلیم کے بغیر کوئی ترقی ممکن نہیں ہوگی۔انہوں نے طلبہ کو نصیحت کی کہ اساتذہ والدین اور اپنے بڑوں کا ادب کرنا سیکھیں، اور خوب محنت ولگن کے ساتھ پڑھائی کریں، مہمان حضرات نے سوسائٹی کے اس اقدام کی زبردست ستائیش بھی کی۔

تقریب کا آغاز حافظ محمد شمش الدین کی قرآت کلام پاک سے ہوا جبکہ نعت شریف ماڈرن اسکول کے طالب علم نے پڑھی۔ تقریب کی کارروائی جناب عبدالقدیر کرسپانڈنٹ اسکول نے چلائی۔ حافظ محمد تقی کنوینر پروگرام کے شکریہ پر تقریب کا اختتام عمل میں آیا۔