نیشنل

کسانوں کو کار سے روند ڈالنے کے الزام میں مرکزی وزیر کے بیٹے کے خلاف قتل کا مقدمہ درج

لکھنو _ اتر پردیش پولیس نے آج کہا کہ  انہوں نے ریاست کے لکھیم پور ضلع میں اتوار کے تشدد کے سلسلے میں کسانوں کی شکایت کی بنیاد پر مرکزی  مملکتی وزیر  داخلہ اجے کمار مشرا ٹینی کے بیٹے آشیش مشرا اور ان کے ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے۔ لکھیم پور کھیری سپرنٹنڈنٹ آف پولیس وجے ڈھل نے بتایا کہ  خاطیوں کے خلاف آئی پی سی کی دفعات 302 قتل ، 120-بی مجرمانہ سازش اور 147 فسادات برپا کرنے کے الزام کے تحت ٹکونیا پولیس اسٹیشن میں ایف آئی آر درج کی گئی ۔

پولیس کے مطابق ، لکھیم پور کھیری میں احتجاجی کسانوں کی ایک کار سے ٹکرانے کے بعد تشدد کے نتیجے میں آٹھ افراد ہلاک ہوگئے۔ ان کا کہنا ہے کہ چار کسان مبینہ طور پر ایک قافلے کی زد میں آ کر ہلاک ہو گئے تھے اور چار دیگر جو کہ ایک گاڑی میں سفر کر رہے تھے کو پیٹ پیٹ کر ہلاک کر دیا گیا۔ یہ واقعہ اترپردیش کے ڈپٹی چیف منسٹر کیشوا پرساد موریہ کے دورہ  سے چند منٹ پہلے پیش آیا ۔ کسان تین مرکزی زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کر رہے تھے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button