اترپردیش سے بی جے پی کا زوال!پنچایت راج انتخابات میں انتہائی ناقص مظاہرہ

لکھنو _ ایسا لگتا ہے کہ اترپردیش سے بی جے پی کا زوال شروع ہوا ہے اترپردیش میں جہاں بی جے پی نے  2017 میں شاندار کامیابی کے ساتھ اقتدار میں آئی تھی لیکن تازہ طور پر  اتر پردیش میں منعقد ہونے والے پنچایت راج انتخابات میں اسے ہزیمت آمیز شکست سے دوچار ہونا پڑا۔اترپردیش میں بی جے پی کے گڑھ سمجھے جانے والے علاقے ایودھیا، وارانسی، متھرا میں بی جے پی کو عوام نے مسترد کردیا ۔ایودھیا کے 40 حلقوں میں بی جے پی صرف 8 میں کامیاب ہو سکی۔ ۔تین مرکزی زرعی قوانین   اور کسانوں کے جاری احتجاج نے پارٹی کو زبردست نقصان پہنچایا ہے

منگل کی شام 3،050 ضلعی پنچایت وارڈوں کے لئے دستیاب رجحانات اور نتائج میں 760 ضلع پریشد حلقوں میں سماج وادی پارٹی، بی جے پی 719 ، بہوجن سماج پارٹی 381 اور کانگریس 76 پر دکھایا گیا۔جبکہ عام آدمی پارٹی کو 77 حلقوں میں کامیابی ملی۔آزاد اور چھوٹی جماعتوں کے 1144  امیدواروں نے  کامیابی حاصل کی۔

نتائج پر تبصرہ کرتے ہوئے سماج وادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو نے کہا کہ حکمراں بی جے پی ڈوبتی جہاز ہے۔ پنچایت انتخابات کے نتائج واضح طور پر ظاہر کرتے ہیں کہ 2022 کے اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کو شکست کا سامنا کرنا پڑے گا ،