انڈین یونین مسلم لیگ کے قومی صدر پروفیسر قادر محی الدین نے آسام کے وزیر اعلی کی آبادی پالیسی کی سخت مذمت کی


چنئی۔(پریس ریلیز)۔ انڈین یونین مسلم لیگ (آئی یو ایم ایل) کے قومی صدر پروفیسر کے ایم قادر محی الدین نے اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں آسام کے وزیر اعلی کی آبادی پالیسی کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔ پروفیسر قادر محی الدین نے کہا ہے کہ آسام کے وزیر اعلی ہیمنت بسواس شرما نے آسام کی آبادی اور خواتین کو بااختیار بنانے کی پالیسی جو یکم جنوری 2021کو تعارفی طور پر نافذ کیا جانا تھا کا اعلان کرتے ہوئے خود کو ہٹلر کی طرح ڈکٹیٹر ثابت کیا ہے۔ آسام کے وزیر اعلی نے کہا ہے کہ جن خاندانوں میں دو سے زیادہ بچے ہیں، جن میں زیادہ تر مسلمان ہیں، انہیں کوئی سرکاری ملازمت حاصل کرنے کا حق نہیں ہوگا اور نہ ہی انہیں حکومت کی فلاحی اسکیموں سے کوئی فائدہ ہوگا اور نہ ہی انہیں بلدیاتی انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت ہوگی۔ لیکن دوسری طرف شیڈول اور قبائلی ذاتوں سے تعلق رکھنے والے چائے اسٹیٹ ورکرس کو چار سے پانچ بچے پیدا کرنے کی چھوٹ دی جارہی ہے۔ آسام کی یہ پالیسی نہ صرف امتیازی سلوک ہے بلکہ سیکولر مخالف اور غیر آئینی ہے۔ وزیر اعلی لوگوں کو تقسیم کرنے اور خاندانی زندگی کو برباد کرنے میں خوشی محسوس کرتے دکھائی دیتے ہیں۔ انڈین یونین مسلم لیگ (IUML) آسام کے وزیر اعلی کی اس امتیازی سلوک کی پالیسی کی شدید مذمت کرتی ہے اور اپیل کرتی ہے کہ ملک کی تمام سیکولر جمہوری قوتوں کو متحد ہوکر اس سیکولر مخالف پالیسی کی مذمت کی جانی چاہئے اور آسا م کے وزیر اعلی سے اصرار کرنا چاہئے کہ امتیازی سلوک اور تباہی کی اس ملک مخالف،غیر آئینی پالیسی کو واپس لیں۔