نیشنل

رکن اسمبلی امانت اللہ خان جیل سے رہا_ سینکڑوں افراد نے رکن اسمبلی کا استقبال کیا

نئی دہلی _ دہلی میں اوکھلا اسمبلی حلقہ سے نمائندگی کرنے والے عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کو دہلی کی ساکیت عدالت سے ضمانت مل گئی۔ امانت اللہ کو ان کے پانچ حامیوں سمیت جمعرات کی شام گرفتار کیا گیا تھا۔ ان پر فسادات بھڑکانے اور سرکاری کام میں رکاوٹ ڈالنے کا الزام ہے۔ گرفتاری کے بعد رکن اسمبلی کی اہلیہ نے ٹویٹ کیا کہ ان کے شوہر کی جان کو خطرہ ہے۔ امانت اللہ اور ان کے حامیوں کو رات میں عدالت میں پیش کیا گیا۔ جس کے بعد عدالت نے سب کو 14 دن کے لیے جیل بھیج دیا۔ عدالت سے ضمانت منظور ہونے کے بعد وہ جیل سے رہا ہوگئے ۔تہاڑ جیل کے باہر سینکڑوں افراد نے امانت اللہ خان کا استقبال کیا اور ان کی تائید میں نعرے لگائے۔

 

دہلی پولیس نے عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کو مجرمانہ ریکارڈ رکھنے والے شخص قرار دیا ہے۔ دہلی پولیس نے کہا ہے کہ رکن اسمبلی امانت اللہ خان کا کردار خراب ہے۔  پولیس نے دعویٰ کیا کہ رکن اسمبلی کے خلاف زمین پر قبضے اور مارپیٹ کے مقدمات درج ہیں۔ ان کے خلاف 18 مجرمانہ مقدمات درج ہیں۔ قبل ازیں،   امانت اللہ خان کو جمعرات کو دہلی میونسپل کارپوریشن کی تجاوزات اور غیر قانونی قبضوں کے خلاف بلڈوزر مہم کی مخالفت کرنے پر گرفتار کیا گیا تھا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button