نیشنل

اگنی پتھ کا معاملہ پہنچا سپریم کورٹ۔ کیا ٹرین جلانے والوں کے گھروں پربھی چلایا جائے گا بلڈوزر؟ درخواست گزارکا سوال

نئی دہلی: اگنی پتھ اسکیم کے خلاف ہنگامہ کا معاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا۔ اس اسکیم کو لے کر سپریم کورٹ میں مفاد عامہ کی عرضی دائر کی گئی ہے۔ سپریم کورٹ کے ایک ریٹائرڈ جج کی صدارت میں اگنی پتھ اسکیم پر نظرثانی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ ایڈوکیٹ وشال تیواری نے سپریم کورٹ میں یہ عرضی داخل کی ہے۔ درخواست میں اگنی پتھ پر تشدد کے معاملے کی جانچ کے لیے ایس آئی ٹی تشکیل دینے کی خواہش کی گئی ہے۔ اس کے ساتھ ہی ملک بھر میں ہونے والے تشدد کے حوالے سے سپریم کورٹ میں اسٹیٹس رپورٹ داخل کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

درخواست میں بلڈوزر کی کارروائی پر بھی سوال

درخواست میں اترپردیش میں کی گئی بلڈوزر کاروائی پر بھی سوالات اٹھائے گئے ہیں۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ چند روز قبل اتر پردیش میں فسادات میں ملوث ہونے کے مبینہ الزام پرحکومت کی جانب سے کچھ مسلمانوں کے مکانات مسمار کیے گئے تھے۔ سپریم کورٹ کے ریٹائرڈ جج نے بھی اتر پردیش حکومت کے اس اقدام پر اعتراض کیا تھا۔ اب اگنی پتھ اسکیم کو لے کر بڑے پیمانے پر پرتشدد مظاہرے ہو رہے ہیں۔ ریلوے اور دیگر سرکاری املاک کو بھاری نقصان پہنچا ہے۔ وکیل نے سوال کیا کہ کیا اب حکومت ٹرین جلانے والوں کے گھروں پر بلڈوزر چلائے گی؟

متعلقہ خبریں

Back to top button