نیشنل

دیوبند احتجاجی مظاہرے میں گرفتار سبھی نوجوان جیل سے رہا _ جمعیتہ علماء ہند کی بڑی کامیابی

دیوبند _ جمعیتہ علماء ہند کو ملی بڑی کامیابی  حاصل ہوئی ہے دیوبند احتجاجی مظاہرے میں گرفتار سبھی نوجوان ضمانت کے بعد جیل کی سلاخوں سے باہر نکل گئے ۔

بی جے پی ترجمان نوپورشرما کے ذریعہ پیغمبر اسلام کی شان میں کی گئی گستاخی کے خلاف گذشتہ 10جون کو نکالے گئے پرامن مظاہرے میں تشدد پھوٹ پڑنے کے بعد پولیس کے ذریعہ گرفتار کئے گئے 10اسیران ناموس رسالت ہفتہ کو عدالت سے ضمانت منظور ہونے کے بعد آج جیل سے رہا ہوگئے۔

ایس ایس پی آکاش تومر نے اتوار کی شام بتایا کہ ناموس رسالت کے نام پر نکالے گئے احتجاجی مظاہرے کے بعد ہونے والے تشدد کے معاملے میں پولیس نے دیوبند سے دانش، لقمان، کاشف، فضل، کریم، زیبر، عباس، شاہ عالم، شاہنواز، عظیم ، صادق اور زبیر کو آئی پی سی کی دفعات 147،148،149،332،353،504،506اور7فوجداری ایکٹ اور سرکاری کام میں روکاوٹ ڈالنے کے الزامات کے ساتھ گرفتار کر کے جیل بھیج دیا تھا۔

جمیعتہ علما ہند(محمود مدنی گروپ) کی جانب سے ان سبھی اسیران ناموس رسالت کے لئے دیوبند کورٹ میں پیروی کی گئی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button