نیشنل

آسام میں بھی چلا بلڈوزر _ پولیس اسٹیشن کو آگ لگا دینے کے الزام میں 5 خاندان کے مکانات گرا دئے گئے

حیدرآباد _ 22 مئی ( اردولیکس ڈیسک ) آسام کے ناگون ضلع میں پولیس اسٹیشن کو جلا دینے کے الزام میں 5 خاندان کے مکانات کو پولیس اور ضلع انتظامیہ نے بلڈوزر سے گرا دیا ۔ جن پر الزام ہے کہ انہوں نے دو دن قبل شفیق السلام نامی شخص کے پولیس اسٹیشن میں موت کے بعد پولیس اسٹیشن کو آگ لگا دی تھی پولیس کے اعلی عہدیداروں نے بتایا کہ پولیس اسٹیشن پر حملہ کرنے کے الزام میں 23 افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے جن میں ٹین خواتین بھی ہے

واضح رہے کہ ہفتہ کے روز آسام میں  مشتعل ہجوم نے ایک پولیس اسٹیشن کواس وقت نذر آتش کردیا جب ایک شخص کی مبینہ طور پر پولیس حراست میں موت ہوگئی تھی ۔ یہ واقعہ آسام کے ناگون ضلع کے بٹا دروا میں پیش آیا تھا ہجوم نے بٹا دروا پولیس اسٹیشن پر حملہ کیا، پولیس والوں پر حملہ کیا، اور پولیس اسٹیشن کو جلا دیا۔

یہ واقعہ مچھلی کے تاجر شفیق الاسلام کی پولیس اسٹیشن میں پولیس کی حراست میں مبینہ ہلاکت کے بعد پیش آیا تھا ۔ اس کی موت کے بارے میں جاننے کے بعد، اس کے رشتہ داروں اور گاوں والوں نے  پولیس اسٹیشن کے اطراف جمع ہوگئے اور اس پر حملہ کردیا تھا  ہجوم نے اس وقت ڈیوٹی پر موجود پولیس ملازمین پر حملہ کیا تھا اور اس کے بعد پولیس اسٹیشن کو آگ لگا دی تھی ۔

شفیق الاسلام کے گھر والوں نے الزام لگایا تھا  کہ اسے پولیس نے مارا پیٹا کیونکہ اس نے انہیں رشوت دینے سے انکار کردیا تھا جو پولیس ملازمین نے ان سے مانگی تھی۔ ان کا الزام ہے کہ پولیس ملازمین نے شفیق السلام کی حراست سے رہائی کے بدلے ان  سے 10,000 روپے، ایک بطخ اور ایک مرغی کا مطالبہ کیا تھا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button