تریپورہ میں تشدد کے واقعات _ عبادت گاہوں اور مسلمانوں کے گھروں کو بنایا گیا نشانہ _ ایس آئی او کی ضلع ایس پی سے نمائندگی

حیدرآباد _ تریپورہ میں شروع ہونے والے فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات میں ہندوتوا گروہوں نے تریپورہ میں کئی مساجد اور مسلمانوں پر حملہ کیا ۔

مکتوب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ، دائیں بازو کے  ہجوم نے زعفرانی لباس پہن کر تلواریں کے ساتھ مسلم مخالف نعرے بلند کرتے ہوئے تشدد برپا کیا اس تشد کی تصاویر اور ویڈیوز میں دیکھا گیا کہ وہ ہتھیاروں کے ساتھ مساجد کی طرف مارچ کر رہے ہیں۔ ہجوم کا تعلق مبینہ طور پر وشو ہندو پریشد (VHP)، ہندو جاگرن منچ، بجرنگ دل اور راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (RSS) سے ہے۔ خبروں میں بتایا گیا ہے کہ یہ تشدد بنگلہ دیش میں فرقہ وارانہ تشدد کا نتیجہ ہے جو گزشتہ ایک ہفتے کے دوران ہوا تھا۔جہاں ہندو اقلیتوں پر حملے ہوئے تھے

اسی دوران جماعت اسلامی کی طلبہ تنظیم ایس آئی او تریپورہ یونٹ کے ذمداروں نے اوناکوٹی ضلع ایس پی سے نمائندگی کرتے ہوئے تشدد کے واقعات میں ملوث افراد کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا۔