نیشنل

دہلی فسادات میں شاہ رخ پٹھان کے خلاف فرد جرم عائد

دہلی فسادات میں شاہ رخ پٹھان کے خلاف فرد جرم عائد

نئی دہلی _ دہلی کی ایک  عدالت نے شاہ رخ پٹھان کے خلاف فسادات اور قتل کی کوشش کے الزامات طے کیے ہیں، جس نے 2020 کے دہلی فسادات کے دوران مبینہ طور پر ایک پولیس جوان  پر بندوق تانی تھی

 

گزشتہ سال دہلی میں پیش آئے فرقہ وارانہ فسادات کے دوران پٹھان کی دہلی پولیس کے ہیڈ کانسٹیبل دیپک دہیا پر بندوق تانتے ہوئے ایک تصویر سوشل میڈیا پر منظر عام پر آئی تھی۔ اسے 3 مارچ 2020 کو گرفتار کیا گیا تھا، اور اس وقت وہ تہاڑ جیل میں مقید ہے۔

 

الزامات عائد کرتے ہوئے، ایڈیشنل سیشن جج امیتابھ راوت نے کہا کہ یہ بالکل واضح ہے کہ پٹھان نے فسادیوں کے ایک گروپ کی قیادت کی،اور کانسٹیبل دیپک دہیا پر  جان لیوا حملہ کرنے کی کوشش کی تھی اور 24 فروری 2020 کو ایک سرکاری ملازم پر مجرمانہ طاقت کا استعمال کیا۔

 

جج نے پٹھان پر آئی پی سی کی دفعہ 147 (فساد کی سزا)، 148 (مہلک ہتھیار سے لیس فساد)، 186 (سرکاری ملازم کو ڈیوٹی کی انجام دہی میں رکاوٹ) اور 188 (سرکاری ملازم کے ذریعہ جاری کردہ حکم کی نافرمانی) کے تحت فرد جرم عائد کیا ۔

 

پٹھان کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 353 (حملہ)، 307 (قتل کی کوشش) کے سیکشن 149  (غیر قانونی اسمبلی کا ممبر ایک عام جرم کا مجرم) اور آرمس ایکٹ کی مختلف دفعات کے تحت بھی الزامات عائد کیے گئے ہیں

متعلقہ خبریں

Back to top button