نیشنل

باغی لیڈر ایکناتھ شندے کے گروپ سے ایک اور رکن اسمبلی فرار ہو کر پہنچ گئے ممبئی

ممبئی _ 24 جون ( اردولیکس) مہاراشٹر میں جاری  سیاسی بحران میں ڈرامائی تبدیلیاں دیکھنے میں آرہی ہیں ۔باغی لیڈر ایکناتھ شندے کے گروپ میں شامل ایک رکن اسمبلی کیلاس پاٹل گوہاٹی کے ہوٹل سے فرار ہو کر ممبئی پہنچ گئے۔

عثمان آباد کے ایم ایل اے کیلاس پاٹل نے کہا کہ بہت سے ارکان اسمبلی جو ایکناتھ شندے کے ساتھ گوہاٹی کے ریڈیسن بلو ہوٹل میں کیمپ کئے ہوئے ہیں دباؤ کی وجہ سے ایکناتھ شنڈے کے کیمپ میں شامل ہو رہے تھے

ان پر دباؤ کی وجہ سے دستخط کر رہے ہیں۔ چیف منسٹر ادھو ٹھاکرے جو بھی فیصلہ لیں گے، ہم اس پر عمل کریں گے۔’ کیلاش پاٹل نے ایک قومی میڈیا کو بتایا کہ  "20 جون کو، ایکناتھ شندے نے مجھے تھانے کے ایک ہوٹل میں رات کے کھانے پر مدعو کیا۔ رات کا کھانا ختم ہونے کے بعد کئی ایم ایل ایز کاروں میں سورت جا رہے ہیں۔ ان کے ساتھ میں بھی کسی   طرح وہاں چلا گیا۔پھر میں نے دیکھا کہ یہ چیف منسٹر کے خلاف بغاوت کرنے والے ارکان اسمبلی کا گروپ ہے اس بات کا پتہ چلنے کے بعد وہ کسی طرح سورت سے بھاگنے کی تیاری کررہے تھے لیکن موقع نہیں ملا۔وہاں سے کمیپ گوہاٹی منتقل کردیا گیا۔ اور میں ہوٹل سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا۔تئ  کلومیٹر تک پیدل چلنے کے بعد  میں ایک  ٹو وہیلر کی مدد سے چیف منسٹر ادھو ٹھاکرے کی رہائش گاہ پہنچا۔

واضح رہے کہ دو دن قبل ایم ایل اے نتن دیشمکھ نے بھی الزام لگایا کہ انہیں اغوا کر کے زبردستی گجرات لے جایا گیا۔ وہ ان سے بچ کر ممبئی آ گیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button