نیشنل

دہلی فسادات کے پہلے فیصلہ میں دنیش یادو کو 5 سال قید _ منوری نامی خاتون کے مکان کو آگ لگانے کا الزام

دہلی فسادات کے پہلے فیصلہ میں دنیش یادو کو 5 سال قید _ منوری نامی خاتون کے مکان کو آگ لگانے کا الزام

نئی دہلی _ 20 جنوری ( اردو لیکس) دہلی فسادات میں قصور وار قرار دئے گئے ایک شخص کو 5 سال قید کی سزا ہوئی ہے دہلی کی ایک عدالت نے جمعرات کو دنیش یادیو نامی شخص کو فروری 2020 میں قومی دارالحکومت کے چند علاقوں میں ہونے والے پرتشدد فسادات کے سلسلے میں مجرم قرار دیتے ہوئے فیصلہ سنایا ہے دہلی فسادات میں سزا پانے والا یہ پہلا شخص ہے

میڈیا رپورٹس کے مطابق مجرم کے  وکیل شیکھا گرگ نے  بتایا کہ  انہیں 12,000 روپے کا جرمانہ بھی ادا کرنا ہوگا۔اس کی سزا کا تفصیلی حکم ابھی جاری نہیں کیا گیا ہے۔دنیش یادو کو  فسادات برپا  کرنے اور ایک 73 سالہ خاتون کے گھر کو لوٹنے اور جلانے میں حصہ لینے کے الزام میں سزا سنائی گئی ۔

استغاثہ نے دلیل دی تھی کہ یادو فسادیوں کے ہجوم کا ایک فعال رکن تھا، اور اس نے شمال مشرقی دہلی کے گوکل پوری میں بھاگیرتھی وہار میں خاتون کے گھر کو توڑ پھوڑ اور جلانے میں اہم  کردار ادا کیا تھا۔

معمر خاتون، جس کی شناخت منوری کے نام سے ہوئی ہے، نے کہا تھا کہ 25 فروری کو تقریباً 150 سے 200 فسادیوں کے ایک ہجوم نے اس کے گھر پر حملہ کیا، جب اس کا کنبہ گھر سے باہر تھا، اور کئی قیمتی سامان لوٹ لیا۔اس نے عدالت کو بتایا کہ کسی طرح اس نے  اپنی جان بچانے کے لیے اپنے گھر کی چھت سے چھلانگ لگانے پر مجبور کیا گیا اور اسے پڑوسی کے گھر میں چھپنا پڑا، جب کہ اس کے اہل خانہ نے اسے بچانے کے لیے پولیس سے رابطہ کیا۔

واضح رہے کہ 4فروری 2020 کو شمال مشرقی دہلی میں فسادات اور پرتشدد واقعات کا سلسلہ شروع ہوا جس میں 53 سے زائد افراد اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے جن میں زیادہ تر مسلمان تھے۔ جبکہ 200 سے زیادہ زخمی ہوئے تھے  بھارتیہ جنتا پارٹی کے ایک لیڈر کپل مشرا کے خلاف نفرت انگیز تقاریر اور تشدد کو بھڑکانے سے متعلق تین شکایات درج کرائی گئی تھی

متعلقہ خبریں

Back to top button