نیشنل

طالبان سے مذاکرات کرنے مرکزی حکومت کو بیرسٹر اویسی نے دیا مشورہ

حیدرآباد _ کل ہند مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اور حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ بیرسٹر اسدالدین اویسی نے کہا کہ طالبان کو ہندوستانی حکومت تسلیم کرے یا نہ کرے  لیکن ان سے مذاکرات کا راستہ کھلا رکھنا چاہیے ۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار اپنے سلسلہ وار ٹوئٹس میں کیا۔بیرسٹر اویسی نے کہا کہ انہوں نے 2013 میں مشورہ دیا تھا کہ وہ ملک کے اسٹریٹجک مفادات کے تحفظ کے لیے طالبان کے ساتھ سفارتی راستے کھلے رکھیں ، لیکن ان کے مشورے پر توجہ  نہیں دی گئی اور الٹا  ان پر تنقید کی گئی۔

صدر مجلس نے کہا کہ میں نے 2019 میں افغانستان کے حوالے سے حقائق پر اپنی تشویش کا اظہار کیا۔ جبکہ پاکستان ، امریکہ اور طالبان ماسکو میں مذاکرات کر رہے ہیں  بیرسٹر اویسی نے کہا کہ ہم ابھی تک نہیں جانتے کہ حکومت کی افغانستان پالیسی کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے افغانستان میں 3 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی ہے اور سوال کیا  کہ حکومت اب کیا کرے گی۔ بین الاقوامی سکیورٹی ماہرین نے بھی کہا ہے کہ وہ طالبان کے ساتھ مذاکرات کریں گے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button