نیشنل

طالبان کے خلاف فیس بک پر پوسٹ ڈالنے والے رکن اسمبلی ڈاکٹر ایم کے منیر کو جان سے مارنے کی دھمکی

حیدرآباد _ طالبان کے خلاف فیس بک پر پوسٹ کرنے والے کیرالا  کے رکن اسمبلی ڈاکٹر ایم کے منیر کو جان سے مارنے کی دھمکی ملی  ہے۔رکن اسمبلی ڈاکٹر منیر نے کہا کہ ” مجھے ایک نامعلوم شخص کی طرف سے دھمکی آمیز خط موصول ہوا جس میں کہا گیا کہ اگر پوسٹ ڈیلیٹ نہ کی گئی تو وہ انھیں زندہ نہیں چھوڑیں گے ۔ تاہم ، منیر نے واضح کیا کہ وہ ان دھمکیوں سے ڈرنے والے نہیں ہیں اور اپنی رائے پر قائم رہیں گے ۔

انڈین یونین مسلم لیگ پارٹی کے رکن اسمبلی ڈاکٹر ایم کے منیر نے 17 اگست کو فیس بک پر طالبان کے خلاف ایک پوسٹ جاری کی۔ انہوں نے فیس بک پر لکھا کہ طالبان تنظیم جو افغانستان کو اپنے قبضے میں لے لیا ہے  وہ ایک گروہ ہے جو انتہا پسندانہ نظریات کا حامل ہے اور یہ کہ طالبان انسانی حقوق کے گروہوں سے تعلق نہیں رکھتے ۔ انہوں نے کہا کہ خواتین مذہب کے نام پر بنیاد پرست پالیسیوں کے ذریعے طالبان ظلم کرتی ہے  اور ماضی میں افغانستان میں معصوم پر مظالم کا ارتکاب کر چکی ہیں۔

ڈاکٹر منیر کی اس فیس بک پوسٹ کے بعد  نامعلوم شخص نے  انہیں دھمکی آمیز خط بھیجا۔ اس  نے دھمکی دی کہ اگر   فیس بک سے پوسٹ نہ ہٹائی تو ان  کا ہاتھ کاٹ دیں گے اور انھیں تشدد کا نشانہ بنائیں گے۔ انہوں نے کیرالہ کے چیف منسٹر پنارائی وجیان اور ڈی جی پی سے  شکایت بھی درج کروائی۔ اور نامعلوم شخص کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ۔ ڈاکٹر منیر نے کہا کہ وہ طالبان کے بارے میں اپنا ذہن تبدیل نہیں کریں گے ان کی پارٹی مسلم لیگ پارٹی کا بھی یہی نظریہ ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button