ہندو لڑکی کی محبت میں مسلم نوجوان نے مذہب تبدیل کردیا

پٹنہ _ ہندو لڑکی کی  محبت میں  ایک مسلم نوجوان نے مذہب تبدیل کرلیا۔یہ افسوسناک واقعہ بہار کے گیا شہر میں پیش آیا

گیا شہر  میں ٹیٹو اسٹوڈیو چلانے والے مصباح کو ایک ہندو لڑکی سے پیار ہوگیا۔ وہ اس کے ساتھ گھر سے بھاگ گیا۔  چونکہ لڑکی نابالغ تھی ، اس کے والدین نے پولیس اسٹیشن میں مقدمہ درج کرایا۔لیکن  پولیس نے مصباح کو  گرفتار نہیں کیا کیونکہ اس کی معشوقہ نے پولیس کو بتایا تھا کہ وہ اپنی مرضی سے مصباح کے ساتھ گئی ہے ۔ اور بتایا کہ وہ دونوں شادی کرنے والے ہیں پولیس سے چھٹکارا پانے کے بعد مصباح نے اپنا مذہب تبدیل کردیا۔ اس نے اپنا نام بدل کر پرنس کمار رکھ لیا۔ پرنس کا کہنا ہے کہ وہ شروع سے ہی ہندو مذہب کو پسند کرتا ہے  اس لئے وہ ہندو مذہب اختیار کرلیا ہے اس نے بتایا کہ کسی نے بھی مذہب تبدیل کرنے کا اس پر  دباؤ نہیں ڈالا وہ خوداپنی مرضی سےمذہب تبدیل کیا ہے ، اور اس کے خاندان کے افراد کوئی مسئلہ نہیں بنائیں گے اب اسے یہ کہتے ہوئے خوشی ہورہی ہے کہ اس کی شادی میں رکاوٹیں نہیں ہیں۔ اسے یقین ہے کہ اس کی گرل فرینڈ کے والدین بھی شادی پر راضی ہوں گے۔