نیشنل

حاملہ خواتین ملازمین اور معذور ملازمین کو کووڈ کے بڑھتے ہوئے معاملات کی وجہ سے دفتر میں حاضری سے مستثنیٰ

 

نئی دہلی  _9 جنوری ( پی آئی بی ) کورونا کی تیسری لہر کے تناظر میں محکمہ عملہ اور تربیت کی طرف سے جاری کردہ رہنما خطوط کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے مرکزی وزیر مملکت (آزادانہ چارج) سائنس اور ٹیکنالوجی؛ وزیر مملکت (آزادانہ چارج) ارتھ سائنسز؛ پی ایم او، عوامی شکایات، پنشن، ایٹمی توانائی اور خلائی وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے آج کہا کہ حاملہ خواتین ملازمین اور دیویانگ ملازمین کو دفتر میں حاضری سےمستثنیٰ رکھا  گیا ہے۔ تاہم، انہیں دستیاب رہنے اور گھر سے کام کرنے کی ضرورت ہوگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ کنٹینمنٹ زون میں رہنے والے تمام اہلکاروں اور عملے کو بھی اس وقت تک دفتر آنے سے استثنیٰ حاصل ہوگا جب تک کہ کنٹینمنٹ زون کو ڈی نوٹیفائی نہیں کیا جاتا۔

وزیر نے مزید بتایا کہ انڈر سکریٹری  کی سطح سے نیچے کے سرکاری ملازمین کی جسمانی حاضری کو اصل طاقت کے 50 فیصد تک محدود کر دیا گیا ہے اور باقی 50 فیصد گھر سے کام کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس کے مطابق تمام متعلقہ محکمےروسٹر  تیار کریں گے۔

تاہم، وزیر نے کہا، وہ اہلکار/عملہ جو دفتر نہیں آ رہے ہیں اور گھر سے کام کر رہے ہیں، ٹیلی فون اور مواصلات کے دیگر الیکٹرانک ذرائع پر ہر وقت دستیاب رہیں گے۔

وائرس کے انفیکشن کے تیزی سے پھیلاؤ کے پیش نظر، ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ عملے اور تربیت کے محکمے کی جانب سے ایک مشورہ جاری کیا گیا ہے کہ جہاں تک ممکن ہو ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے سرکاری میٹنگز کی جائیں۔ اسی طرح، زائرین کے ساتھ ذاتی ملاقاتوں سے گریز کیا جائے، جب تک کہ بالکل ضروری نہ ہو۔

وزیر نے کہا کہ  دفتر کے حاطے میں زیادہ ہجوم سے بچنے کےلئے  ،اہلکار/عملہ متضاد اوقات پر عمل کریں یعنی  ایک )صبح 9بجے سے شام 5.30 بجے تک اور دوسرا) صبح 10دبجے سے  شام 6.30بجے تک۔

دریں اثنا، محکمہ عملہ اور تربیت نے تمام افسران/ عملے کو مشورہ دیا ہے کہ وہ کووڈ کے مناسب رویے کی سختی سے تعمیل کو یقینی بنائیں، یعنی بار بار ہاتھ دھونے/ سینیٹائزیشن، چہرے کا ماسک/ چہرے کو ڈھکنا  اور ہر وقت سماجی دوری کا مشاہدہ کرنا۔

کام کی جگہ، خاص طور پر اکثر چھونے والی سطحوں کی مناسب صاف  صفائی کو بھی یقینی بنایا جا نا چاہئے۔

ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ محکمہ عملہ اور تربیت کی جانب سے جاری کردہ رہنما خطوط کے مطابق مشورہ 31 جنوری 2022 تک نافذ رہے گا۔ اس دوران، وقتاً فوقتاً باقاعدہ جائزہ لیا جائے گا اور حالات کے لحاظ سے رہنما اصولوں پر نظر ثانی کی جا سکتی ہے۔

 

 

 

 

 

متعلقہ خبریں

Back to top button