نیشنل

پنچایتوں اور بلدیات میں اقلیتوں کو بہتر نمائندگی دینے ریاستوں کو مرکزی حکومت کی تجویز : لوک سبھا میں مختار عباس نقوی کا بیان

نئی دہلی _  اقلیتی امور کے مرکزی وزیر  مختار عباس نقوی نے آج لوک سبھا میں ایک تحریری جواب میں بتایا کہ بلدیاتی اداروں کے امیدواروں  کا انتخاب  براہ راست عوام کے ذریعے ایک جمہوری طریقہ کار سے ہوتا ہے اور ان اداروں کے لئے انتخابات متعلقہ ریاستی حکومت کے ذریعے بنائے گئے قوانین کے مطابق اور ریاستی انتخابی کمیشن کی نگرانی میں ہوتا ہے۔ سبھی ریاستی حکومتوں کو پنچایتی راج کی وزارت اور ہاؤسنگ و شہری امور  (پہلے شہری ترقیات کی وزارت) کے ذریعے صلاح دی گئی ہے کہ وہ بالترتیب دیہی اور شہری بلدیاتی اداروں میں اقلیتوں کی نمائندگی کو بہتر بنائیں۔

حکومت نے ملک بھر میں اقلیتوں بالخصوص اقتصادی نقطہ نظر سے کمزور اور پسماندہ طبقات سمیت سماج کے سبھی طبقات کی فلاح و بہبود کے لئے متعدد اسکیموں کا نفاذ کیا ہے، جن میں پردھان منتری جن آروگیہ یوجنا (پی ایم جے اے وائی، پردھان منتری مدرا یوجنا (پی ایم ایم وائی)، پردھان منتری کسان سمان ندھی (پی ایم کسان)، پردھان منتری اجولا یوجنا (پی ایم یو وائی)، پردھان منتری آواس یوجنا (پی ایم اے وائی)، بیٹی بچاؤ بیٹی پڑھاؤ یوجنا وغیرہ شامل ہیں۔

 

اقلیتی امور کی وزارت مرکزی سطح پر نوٹیفائڈ 6 اقلیتی برادریوں یعنی مسلمانوں، عیسائیوں، سکھوں، بودھوں، پارسیوں اور جینیوں کو سماجی – اقتصادی اور تعلیمی اعتبار سے بااختیار بنانے کے لئے پروگراموں / اسکیموں کا نفاذ کرتی ہے۔ ان اسکیموں کے کامیاب نفاذ کے سبب اقلیتی برادریوں سے تعلق رکھنے والے طلباء کے اسکول چھوڑنے کی شرح میں کمی آئی ہے اور اس سے اقلیتوں کو منفعت بخش روزگار کے حصول میں مدد ملی ہے اور اس طرح سے قوم کی تعمیر کے کام میں اقلیتوں کی شراکت داری بڑھی ہے۔  وزارت کے ذریعے نافذ کی جانے والی اسکیموں / پروگراموں کا مختصراً ذکر حسب ذیل ہے:

اے۔ تعلیمی امپاورمنٹ اسکیمیں:

فوائد کی راست منتقلی (ڈی بی ٹی) طریقہ کار کے ذریعے طلباء کو تعلیمی نقطہ نظر سے بااختیار بنانے کے لئے پری – میٹرک اسکالرشپ اسکیم، پوسٹ میٹرک اسکالرشپ اسکیم، میرٹ – کم – مینس بیسڈ اسکالرشپ اسکیم۔مولانا آزاد نیشنل فیلوشپ اسکیم – مالی مدد کی شکل میں فیلوشپ دستیاب کراتی ہے۔نیا سویرا – مفت کوچنگ اور متعلقہ اسکیم – اسکیم کا مقصد اقلیتی برادریوں سے تعلق رکھنے والے طلباء / امیدواروں کو مفت کوچنگ کی سہولت دستیاب کرانا ہے تاکہ وہ تکنیکی / میڈیکل پروفیشنل کورسیز میں داخلے کے لئے ہونے والے داخلہ امتحانات اور متعدد مسابقتی امتحانات کے لئے کوالیفائی کرسکیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button