احمدآباد میں سڑکوں کے کنارے اور مذہبی مقامات کے قریب نان ویجیٹیرین کھانے کی ہوٹلوں پر پابندی

احمدآباد _ گجرات کی بی جے پی حکومت نے ریاست کے اہم شہر احمدآباد میں سڑکوں کے بازو اور مذہبی مقامات کے پاس کسی بھی قسم کے گوشت کی ہوٹلوں اور بنڈیوں پر پابندی عائد کردی ہے اس سلسلہ میں احمد آباد میونسپل کارپوریشن (AMC) نے منگل 16 نومبر سے سڑک کے کنارے نان ویجیٹیرین کھانا فروخت کرنے والے اسٹالوں پر پابندی لگانے کے احکامات جاری کئے ہیں ۔ اے ایم سی کی ٹاؤن پلاننگ کمیٹی نے کہا کہ اسکولوں، کالجوں اور مذہبی مقامات سے 100 میٹر کے دائرے میں اور سڑکوں پر نان ویجیٹیرین کھانا فروخت کرنے والے اسٹالوں کی اجازت نہیں ہوگی۔

ٹاؤن پلاننگ کمیٹی کے چیئرمین دیوانگ دانی نے بتایا کہ یہ پابندی منگل سے نافذ ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ نان ویجیٹیرین اسٹالوں کے تعلق شہر کے لوگوں کی طرف سے بہت سی شکایات آ رہی ہیں۔ ان شکایات کو مدنظر رکھتے ہوئے ٹاون پلاننگ کمیٹی کے اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔

گجرات کے چیف منسٹر بھوپیندر پٹیل نے سڑکوں کے کنارے نان ویجیٹیرین اسٹالوں پر پابندی کے بارے میں کہا ہے کہ لوگ آزاد ہیں کہ وہ جو چاہیں کھائیں۔ یہ سبزی خور یا نان ویجیٹیرین ہونے کا سوال نہیں ہے۔ لوگ آزاد ہیں جو چاہیں کھائیں۔ لیکن اسٹال پر فروخت ہونے والا کھانا نقصان دہ نہیں ہونا چاہئے اور ٹریفک میں رکاوٹ نہیں بننا چاہئے۔

چیف منسٹر پٹیل نے کہا کہ ان اسٹالوں کے خلاف کارروائی کی جا سکتی ہے جو ناقص معیار کا کھانا بیچ رہے ہیں یا ٹریفک نظام میں رکاوٹ ڈال رہے ہیں۔ انہوں نے کہا، کچھ لوگ سبزی خور کھانا کھاتے ہیں اور کچھ نان ویجیٹیرین، بی جے پی حکومت کو اس سے کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ ہماری فکر صرف ان جگہوں پر ملنے والے کھانے کے معیار سے ہے۔