نیشنل

سلمان خورشید کی قیامگاہ پر حملہ _ ہندوتوا کو داعش اور بوکو حرام سے تقابل کرنے پر زعفرانی تنظیموں کے کارکنوں کا ردعمل

نئی دہلی _ زعفرانی تنظیموں کے کارکنوں نے کانگریس کے سینر لیڈر و سابق مرکزی وزیر سلمان خورشید کی قیامگاہ پر حملہ کردیا۔جنھوں نے اپنی ایک کتاب میں ہندوتوا کو داعش اور بوکو حرام سے تقابل کیا تھا اس کتاب کی  حالیہ دنوں رسم اجرائی عمل میں آئی تھی

 

زعفرانی تنظیموں کے کارکنوں نے  نینی تال میں واقع سلمان خورشید کی قیامگاہ میں توڑ پھوڑ کی۔اور دروازے کو آگ لگا دی۔ حملہ آوروں نے توڑ پھوڑ کے بعد سلمان خورشید کا علامتی پتلہ بھی نذر آتش کیا۔ سلمان خورشید نے اس واقعے کی ویڈیوز اپنے فیس بک پیج پر پوسٹ کیں۔ انہوں نے اس واقعے پر سخت ردعمل کا اظہار کیا۔ انہوں نے پوچھا کہ کیا میں نے جو کہا وہ  غلط ہے؟

 

اس دوران ڈی جی آئی نیلیش آنند نے کہا کہ خورشید کے گھر پر حملے کے سلسلے میں راکیش کپل اور دیگر 20 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے اور حملہ آوروں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

 

متعلقہ خبریں

Back to top button