نیشنل

جموں و کشمیر کی صورتحال پر سید سعادت اللہ حسینی کا اظہار تشویش

 

جموں و کشمیر کی صورتحال پر سید سعادت اللہ حسینی کا اظہار تشویش 

نئی دہلی _ جماعت اسلامی ہند (جے آئی ایچ) کے صدر سید سعادت اللہ حسینی نے جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی رپورٹس پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

 

ایک میڈیا بیان میں، جے آئی ایچ کے صدر نے آج کہا  کہ کشمیر میں تصادم میں شہریوں کی ہلاکت کی حالیہ رپورٹوں کو پڑھنے کے بعد ہم انتہائی فکر مند ہیں۔ ہم یہ جان کر بھی پریشان ہیں کہ ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کو ان کی میتیں حاصل کرنے میں بڑی مشکلات اور تاخیر کا سامنا کرنا پڑا۔ انسانی حقوق کے ایک سرکردہ کارکن کی این آئی اے کی طرف سے گرفتاری بھی کافی پریشان کن ہے۔

 

سید سعادت اللہ حسینی نے انکاؤنٹر کی آزادانہ عدالتی تحقیقات کے مطالبے کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ اس انکاؤنٹر میں عام شہری مارے گئے اس لئے  انصاف ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کے ذہنوں میں یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ حکومت قصوروار اہلکاروں اور فوجیوں کو بچانے کی کوشش کر رہی ہے اور ان کے خلاف کوئی کارروائی کرنے کو تیار نہیں ہے اگر ایسے واقعات بغیر کسی نتیجے اور کارروائی کے رونما ہوتے رہتے ہیں تو اس میں مزید تقویت ملے گی۔

 

جناب حسینی نے جے آئی ایچ کے اس دیرینہ موقف کو دہرایا ہے کہ جموں و کشمیر کے معاملات کو ریاست کے لوگوں اور ان کے نمائندوں کے ساتھ بات چیت، مشاورت  کے ذریعے حل کیا جانا چاہیے۔ "جمہوری اقدار اور جمہوری اداروں کو بحال اور مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔ ہم حکومت کو اس کے وعدے اور ذمہ داری کو یاد دلانا چاہتے ہیں کہ ریاست کی حیثیت کو بحال کیا جائے اور جلد از جلد انتخابات کرائے جائیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button