نیشنل

ملک ایمرجنسی کو کبھی بھول نہیں سکتا : وزیراعظم نریندر مودی

نئی دہلی _ 26 جون ( اردولیکس) وزیراعظم نریندر مودی نے اپنے من کی بات پروگرام میں ایمرجنسی کے حالات کو ملک کی عوام سے واقف کروایا۔

آل انڈیا ریڈیو پر ہر ماہ نشر ہونے والے اس پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ اس پروگرام کی ایک کڑی میں آج میں آپ سے ملک کی ایک ایسی عوامی تحریک پر بات کرنا چاہتا ہوں، جس کی ملک کے ہر شہری کی زندگی میں بہت اہمیت ہے۔ لیکن، اس سے پہلے، میں آج کی نسل کے نوجوانوں سے، 24-25 سال کے نوجوانوں سے ایک سوال پوچھنا چاہتا ہوں، اور یہ سوال بہت سنجیدہ ہے، اور میرے سوال پر ضرور غور کریں۔ کیا آپ جانتے ہیں کہ جب آپ کے والدین آپ کی عمر کے تھے تو ایک بار ان سے زندگی کا حق بھی چھین لیا گیا تھا! آپ سوچ رہے ہوں گے کہ یہ کیسے ہوسکتا ہے؟ یہ ناممکن ہے، لیکن میرے نوجوان دوستو! یہ ہمارے ملک میں ایک بار ہوا تھا۔

یہ برسوں پہلے 1975 کی بات ہے۔ جون کا وہی وقت تھا جب ایمرجنسی لگائی گئی تھی۔ اس میں ملک کے شہریوں سے تمام حقوق چھین لیے گئے تھے۔ ان حقوق میں سے ایک ’حق زندگی اور ذاتی آزادی‘ کا حق بھی تھا جو آئین کے آرٹیکل 21 کے تحت تمام ہندوستانیوں کو دیا گیا ہے۔ اس وقت ہندوستان کی جمہوریت کو کچلنے کی کوشش کی گئی تھی۔ ملک کی عدالتیں، ہر آئینی ادارہ، پریس، سب کنٹرول میں تھے۔ سنسرشپ کا یہ حال تھا کہ منظوری کے بغیر کوئی چیز چھاپی نہیں جا سکتی تھی۔ مجھے یاد ہے جب مشہور گلوکار کشور کمار نے حکومت کی تعریف کرنے سے انکار کیا تو ان پر پابندی لگا دی گئی۔ ریڈیو پر ان کی انٹری ہٹا دی گئی۔ لیکن بہت سی کوششوں، ہزاروں گرفتاریوں اور لاکھوں لوگوں پر مظالم کے بعد بھی ہندوستانی عوام کا جمہوریت پر اعتماد متزلزل نہیں ہوا، بالکل نہیں ہوا۔ ہندوستان کے لوگوں کے لیے جمہوریت کی جو قدریں صدیوں سے چلی آرہی ہیں، جمہوری جذبہ جو ہماری رگوں میں ہے، آخرکار اس کی فتح ہوئی ہے۔ ہندوستان کے عوام نے جمہوری طریقے سے ایمرجنسی ہٹاکر جمہوریت قائم کی۔ آمرانہ ذہنیت، آمرانہ رجحان کو جمہوری طریقے سے شکست دینے کی ایسی مثال پوری دنیا میں ملنا مشکل ہے۔

ایمرجنسی کے دوران، ہم وطنوں کی جدوجہد کا، گواہ رہنے کا، شراکت دار رہنے کا اعزاز مجھے بھی حاصل ہوا – جمہوریت کے ایک سپاہی کے طور پر۔ آج جب ملک اپنی آزادی کے 75 سال مکمل کر رہا ہے، امرت مہوتسو منا رہا ہے، ہمیں ایمرجنسی کے اس خوفناک دور کو کبھی نہیں بھولنا چاہیے۔ آنے والی نسلوں کو بھی نہیں بھولنا چاہیے۔ امرت مہوتسو نہ صرف سیکڑوں سالوں کی غلامی سے آزادی کی فتح کی داستان کا احاطہ کرتا ہے، بلکہ آزادی کے بعد 75 سال کے سفر کا بھی احاطہ کرتا ہے۔ تاریخ کے ہر اہم مرحلے سے سبق سیکھ کر ہم آگے بڑھتے ہیں

متعلقہ خبریں

Back to top button