نیشنل

اترپردیش کے سابق چیف منسٹر کلیان سنگھ چل بسے

لکھنو _ بی  جے پی کے سینئر لیڈر ، اترپردیش کے سابق چیف منسٹر کلیان سنگھ (89) کا انتقال ہوگیا۔ وہ  لکھنؤ کے سنجے گاندھی اسپتال میں زیر علاج تھے اور ہفتہ کی رات ان کا انتقال ہوگیا۔ وہ اپنے 60 سالہ طویل سیاسی کیرئیر میں کئی اہم عہدوں پر فائز رہے۔ انہوں نے 10 بار ایم ایل اے ، دو بار چیف منسٹر ، دو بار رکن پارلیمنٹ اور دو ریاستوں کے گورنر کے طور پر خدمات انجام دیں۔ ان کا ایک بیٹا راج ویر سنگھ اور ایک بیٹی پربھا ورما ہیں۔ راج ویر سنگھ فی الحال ایٹ حلقہ سے بی جے پی کے رکن اسمبلی ہیں۔
کلیان سنگھ 5 جنوری 1932 کو اتر پردیش کے ضلع علی گڑھ کے گاؤں مدھولی میں تیج پال سنگھ لودھی اور سیتادیوی کے ہاں پیدا ہوئے۔ 60 سال سے زیادہ کی طویل سیاسی تاریخ رکھنے والے لیڈر کی حیثیت سے کلیان سنگھ نے  کئی اتار چڑھاؤ کا سامنا کیا۔  انہوں نے 1957 میں آر ایس ایس کارکن کے طور پر اپنے کیریئر کا آغاز کیا اور بعد میں جن سنگھ میں شامل ہوئے اور اپنے سیاسی کیریئر کی بنیاد رکھی۔ 1967 میں انہوں نے بھارتیہ جن سنگھ کی جانب سے اتراولی حلقہ سے الیکشن لڑا اور پہلی بار اسمبلی میں داخل ہوئے۔  1980 میں اسمبلی انتخابات میں ، وہ کانگریس (I) کے لیڈر انور خان کے خلاف معمولی فرق سے ہار گئے۔ اس کے بعد انہوں نے اسی حلقے سے 1985 میں دوبارہ بی جے پی کی جانب سے الیکشن لڑا اور 1996 تک اپنی جیت کا سلسلہ جاری رکھا۔ انہوں نے 1967 اور 2002 کے درمیان اتراولی سے 10 بار ایم ایل اے کی حیثیت سے کامیابی حاصل کی ۔اور دو مرتبہ چیف منسٹر بنے۔لیکن 2002 میں راشٹریہ کرانتی پارٹی کی بنیاد رکھی۔

 وہ پہلی بار جون 1991 میں چیف منسٹر بنے۔ انہوں نے ایودھیا کا دورہ کیا اور رام مندر کی تعمیر کا عزم کیا۔ بابری مسجد کی شہادت اس وقت پیش آئی جب کلیان سنگھ  چیف منسٹر تھے۔ اس واقعہ  کے  بعد  کلیان سنگھ کو چیف منسٹر کے عہدہ محروم ہونا پڑا۔ اس کے ساتھ ہی وہاں صدر راج نافذ کیا گیا۔ پھر وہ 1997 کے انتخابات میں بی جے پی کی جیت کے ساتھ دوبارہ چیف منسٹر بنے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button