تلنگانہ

مہاتما گاندھی کے مجسمہ کی منتقلی کے خلاف احتجاج۔ششی دھرریڈی کا خطاب

حیدرآباد: ریاستی وزیر رینواس یادو تاریخی ورثا کو مٹانے کے اقدامات میں مصروف ہے۔ دراصل سری نواس یادو کانگریس کے کارناموں سے خوف کھاتے ہوئے کئی ایک نشانات کو مٹانے کی پالیسی پر گامزن ہے۔ اس طر ح وہ اسمبلی حلقہ صنعت نگر میں تغلغ بنے بیٹھے ہیں۔سکندرآباد M.G Road پر واقع گاندھی پارک میں قدیم گاندھی مجسمہ کی منتقلی کے خلاف منعقدہ احتجاجی پروگرام سے خطاب کے دوران کانگریس سینئر لیڈر ششی دھرریڈی نے ٹی آر ایس حکومت پر بھی سخت تنقید کی۔

اس موقع پر انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ پارک کے ترقیاتی کاموں کے خلاف نہیں ہے، تاہم موجودہ مقام پر واقع گاندھی جی کے مجسمہ کو جوں کا توں قائم رکھنا چاہے۔ کیوں کہ تاریخی مجسمہ کا ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لعل نہرو کے ہاتھوں 1954ء میں افتتاح عمل میں آیا تھا- برساں برس سے ریاست کے مختلف وزراۓ اعلی اور قائدین اہم دنوں میں مجسمہ پر پہنچتے اور انہیں خراخ عقیدت کر تے ہیں۔

پروگرام سے سینئر کانگریس لیڈران وی ہنتمنت راؤ، پنالہ لکشمیہ، جی نرنجن، کونڈا ریڈی، انجن کمار یادو، تلنگانہ اسٹیٹ سابق یوتھ جنرل سیکریٹری ایم پوروروا ریڈی، فیروز خان، ڈی شراون، سابق کارپوریٹرس اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button