جنرل نیوز

تعصب و امتیازی سلوک ترقی میں رکاوٹ کا سبب "

تحریر: – ایس. ایم. عارف حسین. اعزازی خادم تعلیمات

عالمی سطح پر 10 ڈسمبر کو ” یوم انسانی حقوق” منایا جاتا ہے جس کا اعلامیہ 1948 میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کی جانب سے کیا گیا.اس یوم کے اعلامیہ کا عین مقصد دنیا بھر میں انسانی حقوق کا تحفظ ہے.

یوم انسانی حقوق کے ایک افتتاحی اجلاس سے خطاب کے دوران ھمارے ملک کے صدر جمھوریہ رامناتھ کوند نے اس احساس کا اظہار کیا کہ ” تعصب اور امتیازی سلوک” ایک فرد کو اپنی صلاحیتوں اور قابلیت کو دکھانے اور انسانیت کو فائیدہ پہونچانے میں رکاوٹ کا سبب بنتا ہے جسکے تدارک کی شدید ضرورت ہے.یہ خیال واقعی قابل قدر اور تبدیلی لانے کے قابل ہے.

یہ امر حقیقت ہیکہ ھمارا ملک ھندوستان دنیا کا ایک بڑا جمھوری ملک ہونے کے باوجود مذہبی – نسلی- پیشہ ورانہ- علاقائی- تعلیمی- لباس- عقیدہ- ظاہری وضع- بولچال اور ذات پات کی تفریق و امتیاز کا شکار ہے.

نتیجہ میں آے دن انسانی خون خرابہ . عبادتگاہوں کا مثمار- سرکاری ملازمتوں سے محرومی-علاقائی و ریاستی و قومی انتخابات میں نمایندگی سے دوری- آئینی حقوق کے دائیرہ میں اپنے پسند کے مذہب کو اختیار کرنے- اپنے پسند کی مذہبی و عصری تعلیم حاصل کرنے- اپنے پسند کا لباس استعمال کرنے- اپنے مذہب کی ہدایات کے مطابق ظاہری وضع قطع اختیار کرنے – تجارت کرنے- اور پسند کی ریاست و ملک میں سکونت اختیار کرنے میں رکاوٹ و دشواری کا سامنا ہورہا ہے.

ان حالات کے پیش نظر عالمی سطح پر بھی اعتراض کیا گیا اور ناراضگی کا اظہار کرتے ہوے ھمارے ملک کے حکمرانوں کو ان حالات کو روکنے کی جانب اشارہ کیا گیا.

ھمارے ملک کے صدر جمھوریہ جب ان حالات کی طرف اشارہ کررہے ہیں اور گہری فکر کا اظہار بھی کررہے ہیں کہ ” تعصبیات اور امتیازی” سلوک سے پرہیز کیاجانا چاہیے تاکہ ملک کے ہر فرد کو اپنی قابلیت و صلاحیت کی بنیاد پر انفرادی ترقی کا موقع ملے جو بالراست ایک ریاست و ملک کی ترقی کا حصہ ہوگا جو ایک ” حقیقت” ہے اور وقت کی شدید ضرورت بھی .

لھذا بشمول ملک کے صدر اور ریاستی و قومی حکمرانوں کی عین ذمداری ہیکہ ریاستوں اور ملک کو مذکورہ حالات سے عملی طورپر دور رکھنے کیلیے ممکنہ کوشش کریں بلکہ قانون مرتب کریں تاکہ ” انسانی حقوق” کا زندگی کے ہر میدان میں تحفظ ہو اور انسانی زندگی سکون سے گذرسکے.ویسے یہ امر بھی عیاں ہیکہ دنیا کی تخلیق اور اس میں انسان کو سکون کا میسر ہونا "خالق حقیقی” کی منشاء بھی ہے.

” راستہ دیکھ کے چل ورنہ یہ دن ایسے ہیں :

گونگے پتھر بھی سوالات کرینگے تجھ سے ”

تحریر: – ایس. ایم. عارف حسین. اعزازی خادم تعلیمات… مشیرآباد… رابطہ: 9985450106

متعلقہ خبریں

Back to top button