ہندوستان میں اومیکرون سے 2 اموات _ حکومت نے نہیں کی تصدیق

ہندوستان میں اومیکرون سے متاثر دو افراد کی موت _ لیکن حکومت نے تصدیق نہیں کی

حیدرآباد_ 31 دسمبر ( اردو لیکس ڈیسک) ہندوستان کی دو ریاستوں میں اومیکرون سے متاثر دو افراد کی موت ہوگئی لیکن حکومت نے اس کی تصدیق نہیں کی ہے کیونکہ ان میں ایک شخص اومیکرون سے صحت یاب ہونے کے بعد فوت ہوگیا جبکہ دوسرے کی موت رپورٹ موصول ہونے سے قبل ہوگئی ۔

 

راجستھان کے ادے پور کا ایک 73 سالہ شخص حال ہی میں بخار اور کھانسی میں مبتلا تھا۔ اسے  15 دسمبر کو اسپتال میں داخل کیا گیا تھا اور وہ کورونا سے مثبت پایا گیا تھا ۔ اس کے بعد اس کے  نمونے جینوم کی ترتیب کے لیے بھیجے گئے۔ نتائج کی تصدیق 25 دسمبر کو ‘Omicron’ ویرینٹ کے طور پر ہوئی۔ بعد ازاں وہ کورونا ٹیسٹ میں منفی پایا گیا۔ بعد میں اس کی موت ہوگئی۔

 

دریں اثنا، ادے پور کے چیف پبلک ہیلت آفیسر ڈاکٹر دنیش کھراڈی نے کہا کہ اس شخص کی موت کورونا سے صحت یاب ہونے کے بعد  نمونیا کے ساتھ ساتھ دیگر صحت کے مسائل جیسے ذیابیطس، ہائی بلڈ پریشر اور تھائیرائیڈ کی وجہ سے ہوئی ہے۔

 

ایسا ہی ایک واقعہ مہاراشٹر میں پیش آیا۔ نائجیریا کا ایک 52 سالہ شخص حال ہی میں پونے آیا۔ بعد میں اسے ایک اسپتال لے جایا گیا جہاں اس کے کورونا ٹیسٹ ہوئے۔ اس کے نمونے جینوم کی ترتیب کے لیے بھیجے گئے ۔ اسی دوران 28 دسمبر کو متاثرہ کی دل کا دورہ پڑنے سے موت ہوگئی۔ تاہم، اگلے دن 29 دسمبر کو اس کی رپورٹ آئی جس میں پتہ چلا کہ وہ omicran سے متاثر تھا.

 

دونوں ہی واقعات میں فوت ہونے والے اومیکرون سے متاثر تھے ۔ لیکن حکام کا کہنا ہے کہ یہ اموات دیگر وجوہات کی وجہ سے ہوئیں۔ دوسری طرف مرکزی وزارت صحت نے کہا کہ ملک میں اومیکرون کی کوئی موت نہیں ہوئی ہے۔ مرکزی حکومت کا کہنا ہے کہ اگرچہ اومیکرون کے کیسوں کی تعداد ایک ہزار سے تجاوز کر گئی ہے لیکن ان میں سے  374 صحت یاب ہو گئے  ہیں۔