دہلی کے قریب گرگاوں میں سکھوں نے جمعہ کی نماز ادا کرنے مسلمانوں کے لئے کھول دیئے گردوارہ کے دروازے

دہلی _ دہلی کے قریب گروگرام کی ایک گردوارہ کمیٹی نے مسلمانوں کو جمعہ کی نماز کی ادائیگی کے لیے گردوارہ کے دروازے کھول دیے ہیں۔ کمیٹی نے جمعہ کی نماز گرودوارہ میں اہتمام کرنے کی اجازت دے دی ہے ۔ ہریانہ کے گروگرام میں عوامی مقامات پر جمعہ کی نماز کے خلاف مقامی لوگ احتجاج کر رہے ہیں۔ حال ہی میں کئی مقامات پر مقامی لوگوں نے مسلمانوں کو جمعہ کی نماز پڑھنے سے روک دیا تھا۔

 

ان واقعات کو دیکھنے کے بعد  گروگرام صدر بازار کی گرودوارہ ایسوسی ایشن کے صدر شیردل سنگھ سدھو نے  کہا کہ مسلمان جمعہ کی نماز کے لیے گردوارہ کے احاطے کا استعمال کر سکتے ہیں  ‘یہ ’گرو گھر‘ ہے۔ بغیر کسی امتیاز کے تمام طبقات کے لیے کھلا ہے۔ یہاں سیاست نہیں ہونی چاہیے۔

مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ خالی جگہ رکھنے والے افراد  حکام سے  اجازت لیتے ہوئے جمعہ کی نماز کی اجازت دے سکتے ہیں ۔پولیس نے اعتراض کرنے والوں سے  کہا کہ وہ حملے نہ کریں بلکہ حکام سے شکایت کر سکتے ہیں۔ چھوٹی چھوٹی باتوں پر تصادم نہ کرنے کا مشورہ دیا۔

حکام نے مسلمانوں کو گروگرام میں 37 عوامی مقامات پر جمعہ کی نماز ادا کرنے کی اجازت دی۔ تاہم، گروگرام انتظامیہ نے حال ہی میں مقامی لوگوں کے اعتراضات، شکایات اور احتجاج کے بعد آٹھ مقامات پر اجازت نامہ منسوخ کر دیا ہے۔