نورجہاں آم کی قیمت 500 سے ایک ہزار روپئے _ وزن دو سے 5 کلو

حیدرآباد _ آم کا موسم شروع ہوتے ہی بازار میں ہمہ اقسام کے آم دیکھنے کو ملتے ہیں خاص طور تلنگانہ اور آندھراپردیش میں سب سے زیادہ بیگن پلی، دسہری، حمایت، لنگڑا، چوشہ، اور چند ایک قسم کے آم کی کاشت ہوتی ہے اور اس علاقے کے عوام ان ہی آم سے لطف اندوز ہوتے ہیں اور اس کی قیمت 30 تا،150 روپے کلو گرام ہوتی ہے

لیکن ہندوستان میں ایک ایسے آم کی بھی کاشت ہوتی ہے جس کی قیمت 500 سے 1000 ،روپے فی عدد  ہے اور یہ آم تول کر فروخت نہیں کیا جاتا بلکہ عدد کے حساب سے فروخت ہوتا ہے ہر ایک آم کا وزن 2 تا 5 کلو گرام تک ہوتا ہےاور اس آم کا نام نورجہاں ہے

مدھیہ پردیش کے علی راج  پور ضلع میں اس بار اگائے جانے والے ’نورجہاں‘ آم کی بہت بڑی مانگ ہے۔ نورجہان  آم ، افغانی نسل کا ہے اوراس کی افغانستان میں زیادہ کاشت ہوتی ہے، صرف ضلع علی راج پور کے علاقے کٹی واڑہ میں اس کی کاشت کی جاتی ہے۔ تاہم ، پچھلے سال کے مقابلہ میں اس بار  نورجہاں  آم کی قیمت 500 روپے سے ایک ہزار روپئے فی عدد فروخت ہورہا ہے

شیوا راج سنگھ نامی ایک کسان نے بتایا کہ میرے باغ میں  نورجہاں آم کے تین درخت ہیں جس کو 250 آم ہیں ۔ ان آم کی پہلے سے بکنگ کی جاتی ہے ، لیکن اس بار نورجہاں آم کا وزن 2 کلو سے 3.5 کلوگرام ہے۔