اسپشل اسٹوری

کثرت سے موبائل فون استعمال کرنے والا محمد اکرم بن گیا ذہنی مریض _ ہاسپٹل میں زیر علاج

کثرت سے موبائل فون استعمال کرنے والا محمد اکرم بن گیا ذہنی مریض _ ہاسپٹل میں زیر علاج 

حیدرآباد _ راجستھان کے چورو ضلع کے ساہوا گاوں کا 20 سالہ نوجوان محمد اکرم موبائل کا اس قدر عادی ہو گیا کہ اب وہ ذہنی مریض بن چکا ہے۔ گزشتہ ایک ماہ سے کاروبار چھوڑ کر موبائل میں مصروف نوجوان گذشتہ ایک ہفتہ سو نہیں پایا۔ جب اس کی طبیعت خراب ہوئی تو گھر والے اسے چورو کے سرکاری ضلع ہاسپٹل کے ایمرجنسی وارڈ میں منتقل کردئے ۔ یہاں ماہر نفسیات کے ذریعے نوجوان کا علاج شروع کر دیا گیا ہے۔

 

نوجوان کے  چچا ارباز نے بتایا کہ اکرم گاؤں میں ہی الیکٹرک موٹر وائنڈنگ کا کام کرتا ہے۔پچھلے ایک ماہ سے وہ اپنا زیادہ تر وقت موبائل پر گزارنے لگا۔ موبائل کی وجہ سے وہ اپنا کام بھی چھوڑ چکا تھا۔ گھر والوں کے بار بار کہنے پر بھی اس نے موبائل نہیں چھوڑا۔ ساتھ ہی وہ پچھلے کچھ دنوں سے رات بھر موبائل پر چیٹ اور گیم کھیلتا رہتا تھا۔نوجوان کے چچا نے بتایا کہ موبائل فون کے باعث اس نے کھانا پینا بھی چھوڑ دیا تھا۔

اکرم کی والدہ نے بتایا کہ اب اکرم کھانا بھی نہیں کھا رہا۔ میں رات کو کھانا دینے کمرے میں جاتی ہوں تو وہ کھانا بستر پر پھینک دیتا تھا ۔8 ماہ قبل اکرم کی منگنی ہوئی تھی اور جب اس سے فون پر گھنٹوں وقت گزارنے کی وجہ پوچھی جاتی تو اکرم کہتا تھا کہ وہ ہونے والی دلہن سے چیٹ کررہا ہے جس کے بعد اسے ہاسپٹل منتقل کردیا گیا۔اکرم  کی حرکتوں کو دیکھنے کے بعد دماغی امراض کے ماہر ڈاکٹر جتیندر کمار نے بتایا کہ نوجوان کا سٹی اسکین کیا گیا ہے جس کا علاج شروع کر دیا گیا ہے۔

 

اکرم کے جیسے کئی نوجوان موبائل فون پر گھنٹوں گیم میں لگے رہتے ہیں ایسے نوجوانوں کے سرپرستوں کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ اپنے بچوں کو فون کی عادت چھڑا دیں۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ موبائل پر وقت گزارنا بچوں کو ذہنی امراض کی طرف دھکیل رہا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button