ایک ہی پودے سے بیگن اور ٹماٹر _ انڈین کونسل آف ایگریکلچرل ریسرچ کا نیا کارنامہ

حیدرآباد _ انڈین کونسل آف ایگریکلچرل ریسرچ (آئی سی اے آر) کے تحت اترپردیش کے وارانسی میں واقع انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ویجیٹیبل ریسرچ نے بینگن اور ٹماٹر کو ایک پودے سے اگانے  کا  ایک نیا نقطہ نظر تیار کیا ہے۔ ہائبرڈ بینگن کاشی سندیش اور ٹماٹر کی کاشی امان قسم کو جوڑ کر  ایک ہی پودے کے ذریعہ بیک وقت دو قسم کی ترکاری اگانے کے طریقے کو متعارف کیا ہے ۔اس نئے پودے  کو زمین میں لگانے کے 15 سے 18 دن بعد ٹیسٹ کیا گیا۔ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات کیے گئے کہ بینگن اور ٹماٹر کی ٹہنیاں پودے کے ابتدائی مراحل میں توازن میں بڑھیں۔ فی ہیکٹر 25 ٹن نامیاتی کھاد اور کیمیائی کھاد (NPK 150: 60: 100) فی کلوگرام 25 ٹن نامیاتی کھاد اسے کے ساتھ ٹیسٹ کیا گیا۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ بینگن اور ٹماٹر پودے لگانے کے 60 سے 70 دن بعد پکنے لگتے ہیں۔ تجرباتی مرحلے میں ، ایک پودے میں اوسطا 2.383 کلو ٹماٹر اور 2.684 کلو بینگن توڑے گئے۔ آئی سی اے آر کے مطابق نئی پالیسی سے شہری اور مضافاتی علاقوں کو فائدہ ہوگا۔