ہائی کورٹ میں 1998 ڈی ایس سی کیس کی سماعت

حیدرآباد _ تلنگانہ ہائی کورٹ میں  1998 ڈی ایس سی کے تقررات کے کیس کی سماعت ہوئی۔تحقیر عدالت کا سامنا کررہے چار اضلاع کریم نگر، ورنگل، کھمم اور نلگنڈہ کے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسرس نے اپنے موقف کو پیش کیا اور ہائی کورٹ کے سنگل رکنی بنچ کی جانب سے ان کے خلاف عائد دو ماہ کی سزا پر روک لگانے کی ڈیویژن بنچ سے درخواست کی۔ڈی ای اوز کی جانب سے ہائی کورٹ میں پیروی کرنے والے سرکاری وکیل سنجے کمار نے چیف جسٹس ہیما کوہلی پر مشتمل بنچ کی سماعت کے دوران کہا کہ 1998 ڈی ایس سی میرٹ لسٹ کی بنیاد پر سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق اساتذہ کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات عمل میں لائے گئے۔تاہم ان ڈی ای اوز پر ٹربیونل کے احکامات کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں ہائی کورٹ کے سنگل رکنی بینچ نے دو ہزار روپے جرمانہ اور دو ماہ قید کی سزا سنائی ہے سرکاری وکیل نے ڈیویژن بنچ کو بتایا کہ ان ڈی ای اوز نے دو ہزار روپے جرمانہ ادا کردیا۔ان کی دو ماہ قید کی سزا معاف کردی جائے