تلنگانہ

سابق وزیر محمد فرید الدین کی ظہیر آباد میں تدفین۔ ریاستی وزراء تارک راما راؤ، محمود علی کی شرکت

 ظہیر آباد: متحدہ آندھراپردیش کے سابق وزیراقلیتی بہبود و ٹی آرایس لیڈر محمد فرید الدین کی آج تدفین عمل میں آئی جن کا گذشتہ روز انتقال ہوگیاتھا۔وہ شہرحیدرآبادکے ایشین انسٹی ٹیوٹ آف گیسٹروانٹرولوجی میں زیرعلاج تھے۔راج شیکھرریڈی کے دورحکومت میں ان کو وزیراقلیتی بہبود بنایاگیا تھا۔انہوں نے راج شیکھرریڈی کی کابینہ میں دو معیاد تک وزیر کے طورپر خدمات انجام دی تھیں۔

کانگریس کے ٹکٹ پر محمد فرید الدین پہلی مرتبہ متحدہ آندھراپردیش کی اسمبلی کے لئے حلقہ اسمبلی ظہیرآباد سے منتخب ہوئے تھے۔ان کی میت ظہیرآباد میں رکھی گئی اور بعد نمازظہر عیدگاہ میدان ظہیرآباد میں نمازجنازہ ادا کی گئی اور تدفین آبائی قبرستان واقع موضع ہوتی میں عمل میں آئی۔ان کے انتقال پر وزیراعلی کے چندرشیکھرراو کے علاوہ ریاستی وزرا نے ان کو خراج پیش کیا۔ریاستی وزیر داخلہ محمد محمود علی نے سابق ریاستی وزیر محمد فریدالدین کی تجہیز و تکفین میں شرکت کی. محمد فریدالدین کے جسد خاکی کو آخری دیدار کے لیے ظہیر آباد کے اسٹیڈیم میں رکھا گیا تھا، جہاں پر ان کے چاہنے والوں کی کثیر تعداد موجود تھی. وزیر داخلہ محمد محمود علی نے جسد خاکی کا دیدار کرنے کے بعد میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے رنج و غم کا اظہار کیا اور کہا کہ مرحوم کئ ایک خوبیوں کے مالک تھے۔ وزیر موصوف نے مرحوم کی مغفرت کے لیے دعا کرتے ہوئے پسماندگان کو پرسہ دیا اور صبر کی تلقین کی۔

اس موقع پر ریاستی وزیر کے تارک راما راؤ، رکن پارلیمنٹ بی بی پاٹل، تلنگانہ قانون ساز کونسل پروٹم چیرمن بھوپال ریڈی،ارکان قانون ساز اسمبلی پدما دیویندر ریڈی، آر. بالاکرشن، ارکان قانون ساز کونسل فاروق حسین، پربھاکر، وقف بورڈ چیرمن محمد سلیم، سابق وزیر محترمہ گیتا ریڈی، ٹی آر ایس قائدین منیر الدین، شریف الدین، کے عارف الدین، عبدالباسط، خواجہ بدرالدین اور دیگر موجود تھے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button