گریٹر حیدرآباد میں کانگریس نے بی جے پی سے لنگوجی گوڈا ڈویژن چھین لیا

حیدرآباد _ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے ضمنی انتخابات میں بی جے پی کو بڑا دھچکا لگا۔ لنگوجی گوڈا ڈویژن میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں کانگریس نے یہ نشست بی جے پی سے چھین لی ۔گزشتہ سال دسمبر میں منعقدہ انتخابات میں اس حلقہ سے بی جے پی کے امیدوار آکولا رمیش ریڈی نے کامیابی حاصل کی تھی لیکن ان کی اچانک  موت کے باعث یہ حلقہ خالی ہوگیا تھا اور 30 اپریل کو یہاں انتخاب ہوئے تھے بی جے پی کے قائدین نے اس حلقہ میں انتخاب کو بلامقابلہ کرنے کے لئے کوشش کی تھی اور وزیر کے ٹی آر سے درخواست کی تھی کہ وہ یہاں سے الیکشن نہ لڑیں جس پر ٹی آر ایس کی جانب سے  یہاں مقابلہ نہیں کیا گیا تھا ۔ اس کے باوجود کانگریس نے غیر متوقع طور پر بی جے پی کو دھچکا لگا کہ یہ نشست  جیت لی ۔اس جیت کے ساتھ ہی کانگریس میں ایک نیا جوش پیدا ہوا ہے

 

لنگوجی گوڈا ضمنی انتخاب میں بی جے پی سے  متوفی کارپوریٹر کے فرزند اکھل پون گوڑ  ، کانگریس سے دارپلی راجشیکھر ریڈی ، اور چیلیکا چندرشیکھر ، جلہ ناگرجنا  اور شیخ فرویز نے آزاد امیدواروں کے طور پر مقابلہ کیا۔ کانگریس کے امیدوار ڈارپیلی راجشیکھر ریڈی نے شاندار کامیابی حاصل کی۔ اس تازہ فتح کے ساتھ ہی بلدیہ میں کانگریس کے کارپوریٹس کی تعداد تین ہو گئی ہے۔ سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر حکمران جماعت کے امیدوار میدان میں ہوتے تو صورتحال مختلف ہوتی تھی