رکن کونسل کویتا کے ہاتھوں ہائی ٹیکس میں 200 بیڈس پر مشتمل کوویڈ آئیسولیشن سنٹر کا افتتاح

 

حیدرآباد۔ 10؍مئی(پریس ریلیز) ریاستی حکومت کورونا وباء سے نمٹنے جنگی خطوط پر خدمات انجام دے رہی ہے اور اس مہلک وباء سے مقابلے کیلئے ریاست میں ہیلتھ انفراسٹرکچر کو مزید مستحکم کرنے اقدامات کررہی ہے۔ یہ بات دختر چیف منسٹر تلنگانہ کے چندرشیکھر راؤ و رکن قانون ساز کونسل کلواکنٹلہ کویتا نے ہائی ٹیکس سٹی میں قائم کردہ 200 بستروں پر مشتمل کوویڈ آئیسولیشن سنٹر کے افتتاح کے موقع پر بتائی۔ یہ سنٹرنیشنل اکیڈیمی آف کنسٹرکشن (این اے سی ) کے احاطہ میں آرٹ آف لیونگ، انٹرنیشنل اسوسی ایشن فار ہیومن والیوز (آئی اے ایچ وی) اور جی ایچ ایم سی کے اشتراک سے قائم کیا گیا ہے

 

جس میں کورونا مریضوں کے علاج کے ساتھ ساتھ انہیں آکسجن، ادویہ اور معیاری غذا بھی فراہم کی جائے گی۔رکن قانون ساز کونسل کویتا نے پیر کی شام تقریباً5 بجے سائبر آباد پولیس کمشنر وی سی سجنار کے ہمراہ ربن کٹ کرتے ہوئے اس سنٹر کا افتتاح عمل میں لایا۔ رکن کونسل کویتا نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے محکمہ صحت میں مخلوعہ جائیدادوں کو فوری پر کرنےکے احکامات جاری کئے ہیں

 

اور اس کے تحت ریاست بھر میں ڈاکٹرس، نرسیس، لیاب ٹکنیشنس، فارماسسٹ اور پیرامیڈیکل کی سینکڑوں جائیدادوں پر بھرتیاں ہوں گی۔ کویتا نے کہا کہ کورونا کے سبب گزشتہ اور جاریہ سال غریب و متوسط طبقہ کی زندگیوں پر کافی اثر پڑا ہے اور معیشت بھی متاثر ہوئی ہے جس کو مدنظر رکھتے ہوئے چیف منسٹر نے ریاست میں سفید راشن کارڈ رکھنے والی عوام کو آئندہ دو مہینوں تک مفت فی کس 5 کیلو چاول فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ رکن کونسل کویتا نے عوام سے کورونا کو شکست دینے تمام تر احتیاطی اقدامات کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے عوام کو پر ہجوم مقامات پر جانے سے اجتناب کرنے کے علاوہ ماسک اور سینی ٹائزر کے استعمال کا مشورہ دیا۔ اس افتتاحی تقریب میں رکن کونسل کویتا اور سائبرآباد کمشنر پولیس وی سی سجنار کے علاوہ سیریلنگم پلی رکن اسمبلی اریکی پوڑی گاندھی بھی موجود تھے۔