تلنگانہ

ملک میں نفرت پھیلانے والوں کے دلوں کو تبدیل کرنے کے لئے دعائیں مانگیں _ تلنگانہ کے عازمین حج کو سابق وزیر محمد علی شبیر کا مشورہ

حیدرآباد _ 23 جون ( اردولیکس) کانگریس کے سینئر لیڈر و سابق وزیر  محمد علی شبیر نے عازمین حج سے درخواست کی ہے کہ وہ اپنے مقدس سفر کے دوران ملک بالخصوص تلنگانہ میں امن اور خوشحالی کے لیے دعا کریں۔

وہ چہارشنبہ کی رات دیر گئے تلنگانہ سے جانے والے عازمین حج کے تیسرے قافلہ کو حج ہاؤس نامپلی میں وادعی کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ ان کے ساتھ کانگریس کے سینئر لیڈران بشمول سمیر ولی اللہ، سید نظام الدین، انیل کمار یادو، واجد حسین، مقصود احمد، متین شریف، عثمان محمد خان، جاوید صدیقی اور دیگر موجود تھے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے شبیر علی نے عازمین حج کو مشورہ دیا کہ وہ مکہ اور مدینہ کے مقدس شہروں میں قیام کے دوران عبادات پر توجہ مرکوز  کریں۔ جب آپ مسجد حرام میں داخل ہونے کے بعد پہلی بار خانہ کعبہ کی طرف دیکھیں تو اپنے دل سے اور جس زبان میں آپ بہتر سمجھتے ہیں اس میں دعا کریں، اللہ جانتا ہے کہ آپ کے دل میں کیا ہے اور وہ دل سے کی گئی دعا کو قبول کرتا ہے۔

شبیر علی نے عازمین حج کو ان کے مقدس سفر کے لیے مبارکباد پیش کی جو انہیں ‘اللہ کے مہمان’ بناتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان سے آنے والے عازمین گزشتہ دو سالوں سے کوویڈ 19 وبائی امراض کی وجہ سے حج نہیں کر سکے۔ انہوں نے کہا کہ حج کرنے والے ہزاروں مسلمانوں کی آخری خواہش کووڈ کی وجہ سے پوری نہیں ہو سکی۔  انہوں نے کہا کہ اس سال حج کرنے والے تمام لوگ بہت خوش قسمت ہیں

کانگریس لیڈر نے عازمین حج کو مشورہ دیا کہ وہ سفر کے دوران موبائل فون استعمال کرنے سے گریز کریں۔ انہوں نے کہا کہ عازمین اپنا موبائل فون صرف ضرورت کے وقت استعمال کریں اور زیادہ تر وقت مسجد حرام میں گزارتے ہوئے نماز پر توجہ دیں۔

شبیر علی نے کہا کہ ہندوستان فرقہ وارانہ منافرت اور تشدد کے بڑھتے ہوئے واقعات کی وجہ سے مشکل وقت کا سامنا کر رہا ہے۔ ’’میں تمام عازمین حج سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ ملک میں امن کے لیے دعا کریں۔ آپ ان تمام لوگوں کے  دلوں کو تبدیل کرنے کے لیے دعا کریں جو نفرت پھیلا رہے ہیں۔ ہر کسی کو پیار و محبت  پھیلانا چاہیے اور امن کو یقینی بنانا چاہیے

متعلقہ خبریں

Back to top button