ٹی آر ایس حکومت نے حیدرآباد کو قتل کا دارالحکومت بنا دیا : کانگریس

کانگریس نے چیف منسٹر کے سی آر سے وزیر داخلہ، کمشنر کو برطرف کرنے کا مطالبہ کیا۔

حیدرآباد ، 14 اکتوبر: حیدرآباد سٹی کانگریس کمیٹی (ایچ سی سی سی) اقلیتی ڈپارٹمنٹ کے چیرمین سمیر ولی اللہ نے دونوں شہروں حیدرآباد اور سکندرآباد میں قتل کے بڑھتے ہوئے واقعات کی شدید مذمت کی اور وزیر داخلہ محمود علی اور پولیس کمشنر انجنی کمار کو فوری طور پر ہٹانے کا مطالبہ کیا۔

سمیر ولی اللہ نے کہا کہ حیدرآباد کے لوگ ، خاص طور پر کاروباری لوگ خوف میں زندگی گزار رہے ہیں۔ شہریوں کو کوئی تحفظ  نہیں ہے کیونکہ جرائم پیشہ افراد ،  پولیس کے خوف کے بغیر دن کے اجالے میں حیدرآباد کی سڑکوں پر اپنے مخالفین کو بے دردی سے مار رہے ہیں۔

گزشتہ روز بنڈلہ گوڈا میں ایک تاجر کے قتل کا حوالہ دیتے ہوئے سمیر ولی اللہ نے کہا کہ متاثرہ شخص نے اپنی جان کے خوف کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کرانے کے باوجود پولیس کارروائی کرنے میں ناکام رہی۔ صرف اس واقعہ پر پردہ ڈالنے کے لئے ایک سب انسپکٹر کو معطل کر دیا گیا ہے ، لیکن حقیقت یہ ہے کہ پولیس ایک شہری کو سیکورٹی فراہم کرنے میں ناکام رہی جس نے اپنی زندگی کے لیے پہلے سے ہی خوف کا اظہار کیا تھا

سمیر ولی اللہ نے کہا کہ حیدرآباد پولیس کے غفلت آمیز رویہ  نے ‘اسٹریٹ قتل’ کی حوصلہ افزائی کی ہے جس میں ہر ہفتے کم از کم ایک شخص کو برسر عام بے دردی سے قتل کیا جاتا ہے۔

سمیر ولی اللہ نے کہا کہ وزیر داخلہ محمود علی یا تو نااہل ہیں یا انہیں وزارت داخلہ جیسے حساس قلمدان کو سنبھالنے کے اختیارات نہیں ہیں۔ وہ شادیوں اور افتتاحوں میں شرکت تک محدود ہیں۔ ایسا لگتا ہے کہ انہیں اعلیٰ حکام سے جرائم کی صورتحال کے بارے میں کوئی بریفنگ نہیں ملتی اور وہ اخبارات بھی نہیں پڑھتے۔ ہر موقع پر وہ حیدرآباد پولیس کی تعریف کرتے ہیں  اور اسے دنیا کی بہترین پولیس قرار دیتا ہیں ۔

کانگریس لیڈر نے اسلحہ لائسنس سے متعلق حیدرآباد پولیس کی غلط پالیسی کی بھی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ بہت سے روڈی شیٹر اور سماج دشمن عناصر کے پاس لائسنس یافتہ ہتھیار ہیں جو وہ تاجروں کو بلیک میل کرنے اور بھتہ لینے کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔انہوں نے  چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے اسلحہ لائسنس کی پالیسی پر نظرثانی کا مطالبہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ پولیس ان لوگوں کو سکیورٹی فراہم نہیں کر رہی ہے جو ان کی زندگی کو ممکنہ خطرے کا سامنا کر رہے ہیں۔

سمیر ولی اللہ نے  خبردار کیا کہ اگر ریاستی حکومت حیدرآباد کو محفوظ شہر کی حیثیت بحال کرنے کے لیے فوری اقدامات کرنے میں ناکام رہی تو کانگریس پارٹی بڑے پیمانے پر احتجاج کرے گی۔