دلت بندھو اسکیم کے خلاف دائر درخواستوں کی فوری سماعت کرنے سے تلنگانہ ہائی کورٹ کا انکار

حیدرآباد _ دلت بندھو اسکیم کے خلاف دائر کردہ عرضیوں کی فوری سماعت سے تلنگانہ ہائی کورٹ نے انکار کردیا۔دلت بندھو اسکیم کے تحت ریاستی حکومت ریاست بھر کے دلتوں کو بااختیار بنانے کے لئے ہر دلت خاندان کے بینک کھاتہ میں دس لاکھ روپئے کی رقم منتقل کرنا چاہتی ہے۔وزیراعلی کے چندرشیکھرراو نے تجرباتی طورپر اس اسکیم کا آغازحلقہ اسمبلی حضورآباد سے کرنے کا فیصلہ کیا ہے جہاں کا ضمنی انتخاب ہونے والا ہے۔ان کے اس فیصلہ پر مختلف گوشوں بشمول اپوزیشن کی جانب سے نکتہ چینی کی  جارہی ہے۔اس فیصلہ کے خلاف جناواہنی،جئے سوراج پارٹی اور تلنگانہ ریپبلک پارٹی ہائی کورٹ سے رجوع ہوئیں جنہوں نے اس اسکیم کوروکنے کی ریاستی حکومت کو ہدایت دینے کی خواہش کرتے ہوئے دلیل دی کہ حضورآباد سے اس اسکیم کاآغاز دستور کی خلاف ورزی ہے