تلنگانہ

جھوٹے مقدمات میں پھنسنے والے کھمم کے کانگریس قائد محمد مصطفٰی کی 7 ماہ بعد تلنگانہ ہائی کورٹ سے ہوئی رہائی

جھوٹے مقدمات میں پھنسنے والے کھمم کے کانگریس قائد محمد مصطفٰی کی 7 ماہ بعد تلنگانہ ہائی کورٹ سے ہوئی رہائی 

کھمم _ 5 جنوری ( اردو لیکس) کھمم میونسپل کارپوریشن کی کانگریس کارپوریٹر رفیعدہ بیگم کے شوہر محمد مصطفی کو 7 ماہ بعد پی ڈی ایکٹ کے مقدمے میں تلنگانہ ہائی کورٹ نے رہا کردیا اور ان کے خلاف درج پی ڈی ایکٹ کو غیر قانونی قرار دیا ۔جس کے بعد محمد مصطفی حیدرآباد کے چنچل گوڑہ جیل سے رہا ہوئے۔ گزشتہ سال جون میں کانگریس اور ٹی آر ایس کے قائدین کے درمیان تصادم کا واقعہ پیش آیا تھا اس کے بعد محمد مصطفی جو ایک بزنس مین اور کانگریس قائد بھی ہیں کو پی ڈی ایکٹ اور اقدام قتل جیسے سنگین مقدمات کے تحت مقدمہ درج کرتے ہوئے جیل بھیج دیا گیا تھا

 

اپنے شوہر کی رہائی پر کانگریس کارپوریٹر رفیعدہ بیگم نے کہا کہ محمد مصطفی کو سیاسی مخاصمت کے تحت کھمم سے تعلق رکھنے والے وزیر ٹرانسپورٹ پی اجے کمار نے سنگین مقدمات میں پھنسا کر جیل روانہ کیا تھا کیونکہ محمد مصطفی کھمم میونسپل کارپوریشن کے انتخابات سے قبل تک ٹی آر ایس پارٹی سے وابستہ تھے اور پارٹی ٹکٹ نہ دینے اور مسلمانوں کو ٹی آر ایس میں نظر انداز کرنے پر وہ کانگریس میں شامل ہوگئے تھے اور کانگریس پارٹی نے انھیں امیدوار بنایا تھا جس میں انھیں کامیابی حاصل ہوئی۔رفیعدہ بیگم نے کہا کہ ان کی کامیابی سے بوکھلاہٹ کا شکار ہو کر وزیر ٹرانسپورٹ نے ان کے شوہر کے خلاف پولیس کو استعمال کیا۔اور جھوٹے مقدمات درج کروائے۔

 

لیکن اللہ نے ان کے شوہر کو بے قصور ثابت کروایا۔جس پر وہ خدا کا لاکھ لاکھ شکر ادا کرتی ہیں اسی طرح تلنگانہ ہائی کورٹ کی بھی وہ کافی مشکور ہیں جس نے مظلوم کو انصاف دلایا۔کانگریس کارپوریٹر رفیعدہ بیگم نے کہا کہ وہ کانگریس پارٹی کے ہر قائد اور کارکن کا شکریہ ادا کرتی ہیں جنھوں نے ان کے شوہر کی گرفتاری پر ان سے ہمدردی کا اظہار کیا

متعلقہ خبریں

Back to top button