تلنگانہ

اسکولوں کو کھولنے کے خلاف تلنگانہ ہائی کورٹ میں درخواست دائر

حیدرآباد _ تلنگانہ میں اسکولوں کو یکم ستمبر سے کھولنے کے خلاف ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ حکومت نے یکم ستمبر سے ریاست بھر میں تمام پرائمری اور پری پرائمری اسکول بشمول آنگن واڑی کھولنے اور براہ راست کلاسیں شروع کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔ اس کے لیے ، کوویڈ قواعد و ضوابط کے مطابق اسکولوں میں صفائی اور انتظامات کو یقینی بنانے کے لیے ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ تاہم ، آٹھویں جماعت سے کم عمر والوں کو کلاسیں کے انعقاد پر اعتراض کیا جا رہا ہے

اس سلسلہ میں ایک پرائیویٹ ٹیچر بالاکرشنا نے ہائی کورٹ میں ایک درخواست دائر کی ہے جس میں چھوٹے بچوں کو راست کلاسیں روم میں تعلیم دینے کے فیصلے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وبا میں بچوں کے لیے براہ راست کلاسیں نامناسب ہیں ، انہوں نے طبی ماہرین کی وارننگ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کے اشارے ملے ہیں کہ آنے والے دنوں میں کورونا کی تیسری لہر  شروع ہوگی ۔ چھوٹے بچوں کے معاملے میں سماجی فاصلے اور دیگر قوانین پر عمل کرنا بہت مشکل ہے۔ درخواست میں حکومت کی جانب سے جاری کردہ احکامات کو کالعدم قرار دینے کی استدعا کی گئی ہے۔ ہائی کورٹ کے عبوری چیف جسٹس رام چندر راؤ کی سربراہی میں بنچ 31 اگست  کو اس  درخواست کی سماعت کرے گا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button