تلنگانہ

مذہب کے نام پر سیاست ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی _ کورٹلہ میں پارٹی اجلاس سے رکن کونسل کویتا کا خطاب

تلنگانہ ميں بی جے پی اور کانگریس کے درمیان میچ فکسنگ

کورٹلہ _ 21 مئی ( پریس ریلیز) ملک میں مذہب کے نام پر کی جارہی سیاست ہرگز برداشت نہیں کی جائیگی ۔ نفرت اور تفریق کی سیاست کے خلاف ٹی آر ایس پارٹی آواز بلند کریگی ۔ ہمارے دلوں میں بھی بھکتی ہے لیکن سیاست کے لئے ہم مذہب کو استعمال نہیں کرتے ۔ ان خیالات کا اظہار رکن قانون ساز کونسل کلواکنٹلہ کویتا نے میٹ پلی ، کورٹلہ میں منعقدہ پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

انہوں نے کہا کہ سیاست عوامی فلاح و بہبود کے لئے کی جانی چاہئے ۔ رکن کونسل نے کہا کہ ٹی آر ایس پارٹی ترقیاتی کاموں میں ملک بھر میں سر فہرست ہے ۔ تلنگانہ میں ریاستی حکومت کی جانب سے نافذ کردہ فلاحی اسکیمات کی ملک کی دیگر ریاستیں تقلیدکررہی ہیں ۔ رکن کونسل نے مزید کہا کہ بی جے پی نے عوام سے صرف جھوٹے وعدے کئے ہیں ۔ سالانہ دوکروڑ ملازمتیں فراہم کی جائیں گی، 15 لاکھ روپئے بینک کھاتوں میں آئیں گے ۔ پٹرول کی قیمت میں کمی کی جائیگی لیکن ان کے تمام وعدے جھوٹے نکلے ۔

کویتا نے مرکز کی بی جے پی حکومت پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مودی ہے تو مشکل ہے کیوں کہ جی ڈی پی پاتال میں ہے، مہنگائی اور بیروزگاری آسمان پر ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ مودی ہے تو مہنگائی ہے ۔ پارٹی کارکنان سے ٹی آر ایس قائد نے کہا کہ ٹی آر ایس پارٹی کی جانب سے نافذ کردہ فلاحی اسکیمات سے ہر شہری کو واقف کروانا چاہئے ۔ ٹی آر ایس پارٹی عوام سے کئے گئے وعدوں کو پورا کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کے مطالبہ پر کورٹلہ اور میٹ پلی میں دو ریونیو ڈیویژن قائم کئے ۔ 100 بیڈس پر مشتمل ہاسپٹل اور دو منی ٹینک بنڈ کا قیام عمل میں لایا گیا ۔

رکن کونسل کویتا نے پارٹی کارکنان سے کہا کہ بی جے پی اور کانگریس کو گلابی کھنڈوا پہن کر کرارا جواب دیں ۔ دختر وزیراعلیٰ نے کہا کہ بیڑی ورکرس کو پنشن کی فراہمی صرف ریاست تلنگانہ میں ہے ۔ ماضی میں صرف 7 ہزار بی سی طلباء کے لئے سرکاری ہاسٹل کی سہولت تھی لیکن آج ٹی آر ایس حکومت نے1300 کروڑ روپئے کی لاگت سے 281 بی سی ہاسٹل بنائے ہیں اور ایک لاکھ32ہزار بی سی طلباء کو تعلیم فراہم کر رہے ہیں ۔ رعیتو بھیما اسکیم کے ذریعہ کسانوں کے کھاتوں میں رقم کی راست منتقلی کی جارہی ہے ۔ کویتا نے کہا کہ ریاست کے عوام بغیر کسی کرپشن کے فلاحی اسکیمات سے استفادہ حاصل کررہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ریاست میں 95 فیصد جائیدادوں کو مقامی افراد کے لئے محفوظ کردیا گیا ہے ۔ کویتا نے کہا کہ بدعنوانی کے بغیر حکمرانی کرنے کا سہراکے سے آر کے سر جاتا ہے ۔ کویتا نے کہا کہ نظام آباد رکن پارلیمان کی حیثیت سے اروند کو عوام نے منتخب کیا ان کا فریضہ بنتا ہے کہ عوام کے درمیان رہ کر ان کی خدمت کریں ۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں نے رکن پارلیمان اروندکو تین سال کا موقع فراہم کیا لیکن اروند نے جملہ بازی کے علاوہ کچھ نہیں کیا ۔ کویتا نے کہا کہ آر ٹی آئی کے ذریعہ اروند کے جھوٹ کا پردہ فاش ہوگیا ہے ۔ ٹی آر ایس پارٹی کی جانب سے کئے جارہے ترقیاتی کاموں کو بی جے پی جھوٹ کہتے ہوئے اپنا کارنامہ بتارہی ہے ۔

رکن کونسل نے کانگریس قائد جیون ریڈی سے استفسارکیا کہ وہ بی جے پی پر کیوں تنقید نہیں کرتے؟ کسانوں کے مسائل اور قیمتوں میں اضافہ پر بی جے پی سے کیوں سوال نہیں کرتے؟ کیا ان دونوں کے بیچ کوئی میچ فکسنگ ہے ۔ مذکورہ اجلاس میں رکن اسمبلی کورٹلہ ودیا ساگر راءو، رکن قانون ساز کونسل رمناو پارٹی کارکنان کی کثیر تعداد موجودتھی ۔

متعلقہ خبریں

Back to top button