تلنگانہ

کاماریڈی ضلع میں عہدیداروں کی مبینہ ہراسانی سے ڈرائیور کی خودکشی _ 25 لاکھ روپے معاوضہ ادا کرنے محمد علی شبیر کا حکومت سے مطالبہ

کاماریڈی _ 19 جون ( اردولیکس) کانگریس کے سینئر لیڈر محمد علی شبیر نے آر ٹی سی انتظامیہ پر ڈرائیوروں، کنڈکٹرز اور دیگر عملے کو ہراساں کرنے کا الزام لگایا جس کی وجہ سے ان میں سے ایک نے خودکشی کرلی۔

شبیر علی نے کانگریس کے دیگر قائدین کے ساتھ کاماریڈی ضلع کے بھکنور منڈل کے گاؤں پیڈا ملاریڈی کے ایک آر ٹی سی ڈرائیور بنڈی سوامی گوڈ کی رہائش گاہ پہنچ کر اس کی بیوی کو پرسہ دیا  جس نے انتظامیہ کی طرف سے ہراساں کیے جانے کی وجہ سے ہفتہ کے روز خودکشی کرلی تھی ۔ انہوں نے سوامی گوڈ کی اہلیہ سریشا اور خاندان کے دیگر افراد سے ملاقات کی اور کچھ مالی امداد دینے کے علاوہ تعزیت پیش کی۔

لواحقین نے شبیر علی کو بتایا کہ سوامی گوڈ پچھلے کچھ دنوں سے صحت کے مسائل کا شکار تھے جس کی بنیادی وجہ کام کا بوجھ  تھا۔ اگرچہ ہفتے کے روز ان کی طبیعت خراب ہوئی، لیکن انتظامیہ کی طرف سے ان پر ڈیوٹی پر حاضر ہونے کے لیے دباؤ ڈالا جا رہا تھا۔ ہراسانی برداشت نہ کرتے ہوئے، سوامی گوڑ نے خودکشی کرلی۔ اس نے ایک خودکشی نوٹ بھی چھوڑا جس میں آر ٹی سی حکام پر اسے انتہائی قدم اٹھانے کی ترغیب دینے کا الزام لگایا۔

شبیر علی نے وزیر ٹرانسپورٹ پی اجے کمار سے ٹیلی فون پر بات کی اور بندی سوامی گوڑ کے خاندان کے لیے انصاف کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے ریاستی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ لواحقین کو 25 لاکھ روپے معاوضہ ادا کرے۔  انہوں نے آر ٹی سی کے چیئرمین باجی ریڈی گووردھن سے بھی بات کی اور مطالبہ کیا کہ سوامی گوڑ کی بیوی سریشا کو آر ٹی سی میں ملازمت دی جانی چاہئے کیونکہ انہیں دو چھوٹے بچوں اور خاندان کے دیگر افراد کی دیکھ بھال کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ سوامی گوڑ کو خودکشی کے لیے مجبور کرنے والے آر ٹی سی عہدیداروں کے خلاف سخت کارروائی کی جانی چاہیے۔

کانگریس لیڈر نے کہا کہ سوامی گوڑ کی خودکشی کوئی نیا  واقعہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتظامیہ کی طرف سے سینکڑوں آر ٹی سی ملازمین کو بغیر کسی اضافی تنخواہ کے اضافی گھنٹے کام کرنے کے لیے ہراساں کیا جا رہا ہے۔ انکار پر ملازمین کو برطرفی یا معطلی جیسی کارروائی سے خبردار کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملازمتوں کو پر کرنے کے بجائے آر ٹی سی انتظامیہ موجودہ عملے پر اضافی کام کا بوجھ ڈال رہی ہے۔

شبیر علی نے مطالبہ کیا کہ ریاستی حکومت آر ٹی سی انتظامیہ کو کام کے حالات کو بہتر بنانے اور پورے عملے کے لیے مناسب طبی دیکھ بھال کو یقینی بنانے کی ہدایت کرے۔ انہوں نے کہا کہ آر ٹی سی انتظامیہ کو ڈرائیوروں، کنڈکٹرز یا دیگر عملے کو جب ان کی صحت ٹھیک نہیں رہتی تو انہیں ڈیوٹی پر رپورٹ کرنے پر مجبور نہیں کرنا چاہئے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button